سعودی عرب: کوہ ’شدا‘ کی پُر اسرار غاریں زمانہ قدیم میں مسکن کیسے بنیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے جنوی پہاڑی علاقے'شدا' کی غاروں کو کسی زمانے میں‌ لوگوں‌ نے اپنی رہائش گاہوں کے طور پر استعمال کیا۔ یہ پہاڑی غاریں آج ماضی میں انسانی تمدن کی یاد دلاتی ہیں اور سیاح جوق در جوق ان پہاڑی غاروں کو دیکھنے کے لیے آتے ہیں۔

ان پہاڑی غاروں کا تذکرہ ایک ایسے وقت میں کیا جا رہا ہے جب سعودی عرب کی وزارت سیاحت نے موسم سرما کے 'سیاحتی پروگرام' کے تحت سیاحتی مقامات پر سیاحوں کی آمد ورفت جاری ہے۔ اس پروگرام کا مقصد سعودی عرب میں سیاحت کے شعبے میں سرمایہ کاری کے مواقع پیدا کرنا اور مقامی اور غیر ملکی سیاحوں کو مملکت میں موجود سیاحتی مقامات کی طرف راغب کرنا ہے۔ سعودی وزارت سیاحت کی طرف سیاحتی پروگرام تمام سال جاری رہتے ہیں۔ سرما سیزن میں سردیوں کی مناسبت سے سیاحتی پروگرام تشکیل دیے جاتے ہیں اور موسم گرما میں گرمیوں کی مناسبت سے تفریحی اور سیاحتی سرگرمیاں انجام دی جاتی ہیں۔

کوہ 'شدا' سعودی عرب کے جنوب میں الباحہ کے علاقے میں واقع ہے۔ یہ پہاڑ جزیرۃ العرب کے مشہور پہاڑوں میں سے ایک ہے۔ سطح سمندر سے اس کی بلندی 1700 میٹر ہے۔ مملکت میں‌ یہ سب سے زرخیز پہاڑ ہونے کے ساتھ ساتھ سیاحوں کا بھی مرکز رہتا ہے۔ اس کی پُر اسرار غاروں کی سیر کے لیے اندرون اور بیرون ملک سے سیاح کچھلے چلے آتے ہیں۔ کوہ شدا اور اس کی چٹانیں گرینائٹ پتھروں کا بھی ایک بڑا ذخیرہ اپنے اندر سموئے ہوئے ہیں۔

کوہ شدا کے بارے میں ماضی میں بھی مصنفین نے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ الحموی اور الہمدنی جیسے مصنفین کی ممالک اور خطوں کے بارے میں لکھی کتابوں، پہلی صدی میں فوت ہونے والے شاعر الاصفہانی کی شاعری میںً بھی اس پہاڑ کا تذکرہ موجود ہے۔

دانشور اور مورخ ناصر الشدوی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے کوہ شدا کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ کوہ شدا دو حصوں پر مشتمل ہے۔ ایک زیریں پہاڑ اور دوسرا بالائی پہاڑ۔ زیریں پہاڑ ایک منفرد ارضیاتی منظر پیش کرتا ہے اور یہ اپنی غاروں اور وسیع گرینائٹ کے ذخائر کی وجہ سے شہرت رکھتا ہے۔ ان غاروں میں ماضی میں ہزاروں سال لوگوں کی رہائش رہی۔ چٹانوں پر آج بھی زمانہ رفتہ کے نقوش ان میں رہنے والوں کی یاد تازہ کرتے ہیں‌۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں‌نے کہا کہ یہ پہاڑی غاری قدرتی طور پر بنے بنائے گھر ہیں۔ انہیں تھوڑی بہت مرمت کے بعد رہائش کے لیے استعمال کیا جاتا رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں