.

مدینہ منورہ کے قریب پہاڑی چوٹیاں بادلوں کی لپیٹ میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مدینہ منورہ کے نواحی پہاڑی چوٹیوں پر موسم سرما میں اس بار دھند اور بادلوں کی زیادہ مقدار دیکھی جا رہی ہے۔ ایک مقامی فوٹو گرافرنے 'الفقرہ' پہاڑی چوٹیوں پر گہرے اور سفید بادلوں کے مناظر کو اپنے کیمرے میں محفوظ کیا ہے جنہیں سوشل میڈیا پر بے حد پسند کیا گیا۔

فوٹو گرافر اسامہ الحربی نے الفقرہ پہاڑوں پر جمع ہونے اور وہاں سے گذرنے والے بادلوں کے مناظر کیمرے میں محفوظ کیے جنہیں اس نے سوشل میڈیا پر پوسٹ کیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے الحربی نے کہا کہ وہ سیاحت کا بے حد شوقین ہے اور خشکی کے علاقوں، پہاڑی مقامات، سیاحتی اور تفریحی اہمیت کے حامل مقامات کی سیر کے دوران وہ ان مقامات کی تصاویر بھی بناتا رہتا ہے۔ حال ہی میں اس نے الفقرہ پہاڑی علاقے کی تصاویر بنائیں۔ یہ تصاویر اس وقت بنائی گئیں جب پہاڑی چوٹیاں بادلوں سے ڈھکی ہوئی تھیں۔

اسامہ الحربی نے بتایا کہ فوٹو گرافی کے شوق کے پیش نظر اس نے فن کو سیکھنے کے لیے متعدد کورسز کیے اور انٹرنیٹ پر موجود فوٹوگرافی کےحوالےسے معلوماتی مواد سے بھی اس فن کو سیکھا۔ اس نے بتایا کہ وہ اب تک جازان، الفقرہ،ساحل راس الابیض، تبوک کی برف باری،حقل کے ساحلی مقامات کی تصاویر کشی کے ساتھ مختلف موسمی حالات میں پیدا ہونے والے مناظر، پہاڑوں، میدانوں، ساحلوں اور سرسبز وادیوں کی تصاویر کا ایک بڑا ذخیرہ جمع کر چکا ہے۔

اس نے بتایا کہ الفقرہ پہاڑی چوٹیوں کی تصاویر کے موقعے پر اس نے پہاڑوں کی بلندی اور چوٹیوں سے ٹکراتے بادلوں کی تصاویر پر توجہ مرکوز کی۔ اس نے بتایا کہ الفقرہ کی تصویر کشی کےدوران میرا ڈرون بھی بادلوں میں گم ہوگیا۔ تاہم بعد میں ڈرون واپس آگیا۔ ڈرون کی مدد سے میں‌بے بادلوں کے اوپر سے پہاڑی چوٹیوں کے مناظر کو کیمرے میں محفوظ کیا۔

اسامہ الحربی کا کہنا تھا کہ الفقرہ پہاڑی چوٹیوں پہاڑوں کا ایک سلسلہ ہے اور اس کی بلند ترین چوٹی سطح سمندر سے 1901 میٹر بلندی پر واقع ہے۔