.

مصر: پڑھائی میں حسد، طالبہ نے اپنی ہم جماعت زہر دے کر مار ڈالی، دوسری کے گردے ناکارہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں ذرائع ابلاغ میں پڑھائی میں آگے بڑھنے والی طالبات کو ان کی ہم جماعت لڑکیوں کی طرف سے زہر دے کر ہلاک کرنے کا ایک لرزہ خیز واقعہ سامنے آیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق قاہرہ کے قریب سامنے آنے والے اس واقعے کی تحقیقات سے پتا چلا ہے کہ اپنی ہم جماعت لڑکی کی طرف سے زیر دیئے جانے سے ایک طالبہ کی موت واقع ہو چکی ہے جب کہ ایک کے گردے ناکارہ ہوچکے ہیں۔

مصری ذرائع ابلاغ میں آنے والی خبروں‌ میں‌ بتایا گیا ہے کہ اسکندریہ شہرکے ایک اسکول کی تین طالبات نے گذشتہ ایک سال سےمتعدد بار پڑھائی میں ان سے زیادہ لائق بچیوں کو زہر دے کراپنے حسد کی آگ بجھانے کی کوشش کی گئی۔ اسکندریہ پولیس کو اس واقعے کی شکایت ملنے کےبعد اس کی تحقیقات شروع کی گئیں اور شبے میں اسکول کی طالبات کو گرفتار کیا گیا۔ تین طالبات کو چار روزہ جسمانی ریمانڈ پر حراست میں لیا گیا ہے۔ ان لڑکیوں نے اعتراف کیا ہے کہ انہوں‌نے 'الجاتوہ' نامی ایک دیسی کیک میں مہلک زہر ملا کر ایک سے زیادہ لٰڑکیوں کو دیا ہے۔

زہر کھانے سے طالبہ کی موت کا واقعہ ایک سال پرانا ہے۔ 23 جنوری کو ایک لڑکی کو پیٹ میں شدید تکلیف کےبعد امریکی یونیورسٹی اسپتال لایا گیا۔ اس کے بعد کچھ اور طالبات کو بھی اسپتال منتقل کیا گیا۔ متاثرہ لڑکیوں کے بیانات سننے کے بعد پولیس نے مشکوک لڑکیوں‌کے خلاف کارروائی شروع کی۔

اسپتال لائی گئی لڑکیوں‌نے بتایا کہ اسکول سے چھٹی کے بعد وہ ایک وین پر گھر جا رہی تھیں کہ اس دوران انہیں ایک لڑکی نے کیک دیا۔ ان میں سے 6 لڑکیوں‌نے کیپ تھوڑا تھوڑا کھایا۔ کیک کھاتے ہی ان کی حالت غیر ہوگئی۔ تاہم اس معاملے کی حقیقت پردہ راز میں رہنے کی وجہ سے ایک لڑکی کی ہلاکت کا سبب معلوم نہیں ہو سکا۔ پراسیکیوٹر نے پولیس کو اسے واقعے کی چھان بین جاری رکھنے کا حکم دیا۔

گرفتار کی گئی ایک لڑکی نے بتایا کہ وہ اور اس کی دو دیگر ہم جماعت لڑکیوں‌نے پڑھائی میں حسد کی بنا پر دوسرے لڑکیوں کو امتحان سے باہر رکھنے کے لیے یہ خطرناک کھیل کھیلا ہے۔