.

یمنی فوج نے 20 بم دھماکوں میں ملوث حوثی دہشت گرد سیل گرفتار کر لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے مغربی ساحل پر تعینات جوائنٹ سیکیورٹی فورسز نے کل بدھ کے روز ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کا ایک دہشت گرد سیل گرفتار کرنے کا دعویٰ‌کیا ہے۔ پکڑے گئے حوثی باغیوں نے المخا اور الخوفہ ڈاریکٹوریٹس میں کم سے کم 20 بم دھماکوں میں ملوث ہونے کا اعتراف کیا ہے۔

جوائنٹ فورسز کی طرف سے بدھ کو جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ حوثی باغیوں کا ایک دہشت گرد سیل پکڑ لیا گیا ہے، اس سے تفتیش جاری ہے۔ تفتیش کے بعد مزید معلومات سامنے لائی جائیں گی۔ بیان میں‌ کہا گیا ہے کہ حوثی باغی المخا اور الخوخہ میں دہشت گردی کی بڑی بڑی کارروائیوں میں‌ملوث ہیں اور انہوں نے ان علاقوں میں کم سے کم 20 بم دھماکے کرائے۔

جوائنٹ فورسز کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ مسلح افواج نے گذشتہ چند ماہ کےدوران مغربی ساحلی علاقوں میں‌ حوثی دہشت گردوں کے خلاف کارووائیوں میں کئی اہم کامیابیاں‌حاصل کی ہیں۔ اس علاقے سے دہشت گردوں کا صفایا کرنے کی مہم کامیابی کے ساتھ جاری ہے۔ مغربی ساحلی علاقے سے حوثیوں کے دہشت گرد سیل کی گرفتاری اہم پیش رفت ہے۔

یمنی فوج کی انٹیلی جنس ایجنسیوں نے گذشتہ سال اسی علاقے سے حوثیوں کے چار سیل گرفتار کیے گئے۔ ان میں ایک ایرانی پاسداران انقلاب کے ساتھ اسلحہ کی اسمگلنگ کے لیے کام کر رہا تھا۔