.

سعودی وزارت صحت کی تیونسی ہیلتھ ورکر کی بغیر ڈگری ملازمت کی تحقیقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی وزارت صحت نے تیونس کی ایک ہیلتھ ورکر کی جانب سے سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ایک ویڈیو کی تحقیقات کا فیصلہ کیا ہے۔

وزارت صحت کا کہنا ہے کہ جدہ میں طب کے شعبے میں‌ کام کرنے والی ایک تیونسی خاتون ورکر سامیہ الطرابلسی نے ویڈیو میں کہا ہے کہ وہ گذشتہ کئی سال سے سعودی عرب میں ڈگری کے بغیر میڈیکل کے شعبے میں ملازمت کررہی ہے۔

وزارت صحت کا کہنا ہے کہ جدہ کے ایک طبی مرکز میں ملازمت کرنے والی تیونسی خاتون چھ سال سے اس میدان میں کام کررہی ہے۔ اس ویڈیو کے سامنے آنے کے بعد اس کی تحقیقات شروع کردی گئی ہیں‌۔

وزارت صحت کا کہنا ہے کہ کسی مقامی یا غیر ملکی کو مملکت کے قانون کے ساتھ کھیلنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔