جزیرہ نما سینا میں‌ کاشت کاری کے منصوبے کے لیے عالمی ایوارڈ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مصر کی ایک طالبہ نے جزیرہ نما سینا کو قابل کاشت بنانے کے لیے'صحرائی کشش' کے عنوان سے ایک منفرد منصوبہ پیش کیا جسے سال 2020ء کے پانچ بہترین منصوبوں میں سے ایک قرار دیا گیا اور اس پروجیکٹ کے لیے تعمیرو ترقی کے عالمی ایوارڈ کا اعلان کیا گیا ہے۔

منصوبے کے لیے جنوبی سینا کے نوبیع شہر میں وادی الوشواش کو مختص کیا گیا ہے۔ پروجیکٹ کو آگے بڑھانے اور عملی شکل دینے کے لیے اطراف کے ماحول، مٹی پہاڑوں کو استعمال کرتے ہوئے اس اراضی پر غذائی اجناس، قدرتی جڑی بوٹیاں، ادویات میں استعمال ہونے والی جڑی بوٹیاں، عطریات کی تیاری میں استعمال ہونے والی جڑی بوٹیاں کاشت کرنا ہے۔ اس کے علاوہ اس منصوبے میں جزیرہ سینا میں تفریحی اور سیاحتی کمپلیکس کا قیام عمل میں لانا ہے جس میں تفریح کے ساتھ ساتھ تعلیم بھی دی جاسکے۔

منصوبہ پیش کرنے والی ایپلائیڈ آرٹ کالج کی طالبہ ندیٰ ایمن نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس نے اپنے پروجیکٹ کے لیے وادی الوشواش کو منتخب کیا۔ یہ جگہ رنگا رنگ وادیوں کے درمیان ہے۔ ہم اس کی مٹی، پانی اور معدنیات کو اچھی اور صحت مند کاشت کے لیے استعمال کرسکتے ہیں۔

منصوبے کا بنیادی حصہ ہائیڈرو پونک فارم پر مشتمل ہے۔ اس میں بغیر مٹی کے زرعی نظام سے اجناس کا حصول ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ پودوں کی جڑوں کو غذا بخش مائع پرمشتمل محلو میں تیار کرنا اور اس محلول کو باربار کاشت کاری کے لیے استعمال کرنا ہے۔ اس اسکیم میں روایتی زراعت کی نسبت پانی کی 70 فی صد کم مقدار درکار ہوتی ہے۔ کاشت کاری کے اس منفرد طریقے سے 100 فی صد قدرتی پیداوار حاصل ہوسکتی ہے اور اس کے لیے الگ سے مٹی اور کھاد کی بھی ضرورت نہیں پڑے گی۔

International Award for Farming Project in the Sinai Peninsula

ایک سوال کے جواب میں ایمن نے بتایا کہ منصوبے میں تین مرکزی اور 8 ذیلی مقامات کو مختص کیا گیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ جنوبی سینا کا علاوہ عطریات کی جڑی بوٹیوں کے لیے مشہور ہے۔ یہاں‌پر خود رو طریقے سے اگنے والی جڑی بوٹیوں کو زمانہ قدیم سے لوگ دوائیوں کی تیاری میں استعمال کرتے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں