.

جوبائیڈن کی منظوری سے ایرانی حمایت یافتہ ملیشیا پر پہلی کاری ضرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی حکام کا کہنا ہے کہ صدر جوبائیڈن کی منظوری کے بعد شام میں ایک ایرانی حمایت یافتہ عسکری گروپ پر فضائی حملہ کیا گیا ہے جس کے نتیجے میں تنظیم کو بھاری جانی اور مالی نقصان پہنچا ہے۔

امریکی عہدے داروں نے جمعہ کے روز خبر رساں ادارے 'رائیٹرز' کو بتایا کہ امریکا نے شام میں ایرانی حمایت یافتہ گروپ کو نشانہ بناتے ہوئے اسپر ایک فضائی حملہ کیا ہے۔

عہدیداروں نے بتایا کہ امریکی صدر جو بائیڈن نے شام میں ایرانی دھڑے پر حملے کی منظوری دے دی تھی۔

یہ کارروائی عراق میں امریکی اہداف پر کئی میزائل حملوں کے بعد کی گئی ہے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ عراق میں امریکی تنصیبات پرحملوں میں ملوث ایک ایرانی گروپ کو شام کی سرزمین پر نشانہ بنایا گیا ہے۔

امریکی محکمہ دفاع (پینٹاگان) نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ کارروائی ایک واضح پیغام ہے کہ بائیڈن امریکیوں اور اپنے اتحادیوں کی حفاظت کے لیے کام کرے گا۔

پینٹاگان نے انکشاف کیا کہ اس کارروائی میں حزب اللہ بریگیڈ اور "سید الشہداء بریگیڈ" ملیشیا کے زیر استعمال متعدد ٹھکانوں کو تباہ کر دیا۔

انہوں نے کہا کہ شام میں امریکی چھاپہ مار کارروائی عراق میں اتحادیوں اور امریکیوں کو نشانہ بنانے کا ردعمل ہے۔ پینٹاگان نے بتایا کہ امریکی فوج نے بائیڈن کی ہدایت پر یہ بمباری کی۔