.

یمن کے لیے 430 ملین ڈالر مالیت کی سعودی امداد کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شاہ سلمان مرکز برائے امداد و انسانی خدمات کے نگران اعلی ومشیر ایوان شاہی ڈاکٹر عبداللہ الربیعہ نے کہا ہے کہ ’یمن کی مدد کے لیے اقوام متحدہ کے انسانیت نواز پروگرام برائے 2021 کی مد میں سعودی عرب 430 ملین ڈالردے گا‘۔

ڈاکٹر عبداللہ الربیعہ نے یہ اعلان اقوام متحدہ، سوئٹزرلینڈ اور سویڈن کی سرپرستی میں یمن کے لیے ڈونرز کانفرنس سے آن لائن خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ورچوئل کانفرنس نیویارک میں ہو رہی ہے جس میں عطیہ دینے والے کم سے کم 100 اداروں کے نمائندے شرکت کر رہے ہیں۔

انھوں نے نئے کرونا وائرس کے باعث دنیا بھر کو درپیش غیر معمولی حالات میں یمن کے لیے امدادی ورچوئل کانفرنس کے انتظامات پر سوئٹزرلینڈ، سویڈن اور اقوام متحدہ کا شکریہ ادا کیا اور امید ظاہر کی کہ کانفرنس سے اہل یمن کے انسانی مسائل کے پائیدار حل برآمد ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ ’یمن بڑے انسانی المیے کا شکار ہے۔ کووڈ 19 کے باعث اقتصادی وصحت مسائل، ایران کے حمایت یافتہ حوثیوں کی جانب سے پیدا کیے جانے والے بحرانوں خصوصا یمن میں گھر سے بے گھر اہل یمن کی پناہ گاہ مارب پر حوثیوں کے حملوں سے صورتحال مزید بگڑ گئی ہے‘۔

یاد رہے کہ سعودی عرب گزشتہ 5 برس کے دوران یمن کو 17 ارب 3 لاکھ ڈالر کی مدد دے چکا ہے۔ یمن کے سینٹر بینک کی 2 ارب ڈالر سے مدد کرچکا ہے۔

اس کے علاوہ سعودی عرب میں سکونت پذیر یمنیوں کے لیے 8 ارب 133 ملین ڈالر کی مدد دے چکا ہے۔

یمنی حکومت کو 199 ملین ڈالر پیش کر چکا ہے- ترقیاتی شعبوں میں 296 ملین 7 لاکھ 42 ہزار ڈالر کی مدد دے چکا ہے جبکہ شاہ سلمان مرکز کے ذریعے فروری 2021 تک 575 منصوبوں پر 3 ارب 500 ملین ڈالر خرچ کرچکا ہے۔