.

سعودی عرب:725 جعلی ڈگریاں ضبط، انجینیرنگ کی 2 ہزار پیشہ وارانہ خلاف ورزیوں پر کارروائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی انجینیرز کونسل کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مملکت میں ایک سال کے دوران انجینیرنگ کی 725 جعلی ڈگریاں قبضے میں لی گئیں جب کہ 2020ء کے دوران انجینیرنگ کے پیشے سے منسلک افراد کے پیشہ وارانہ ضوابط کی خلاف ورزیوں کے 2 ہزار کیسز کا اندراج کیا گیا۔ اس دوران غیر مجازاداروں کی طرف سے انجینیرنگ کی 1788 اسناد ضبط کی گئیں۔

اسی سیاق میں سعودی عرب کی انجینیر کونسل کے سیکرٹری جنرل انجینیر فرحان الشمری نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مملکت میں انجینیر کونسل کے مجاز دفاتر کی تعداد 2614 ہے۔ یہ تمام دفاتر مملکت کے 13 علاقوں میں تقسیم ہیں۔ 943 دفاتر کے ساتھ الریاض پہلے نمبر پر ہے۔ اس کے بعد مکہ معظمہ میں 682، مشرقی سعودی عرب میں 373، شمالی علاقوں میں 16 دفاتر ہیں۔ دیگر دفاتر مدینہ منورہ، القصیم، عسیر، تبوک، حائل، جازان، نجران اور الباحہ میں قائم ہیں۔

انہوں‌ نے مزید کہا کہ مملکت میں سال 2020ء کے دوران رجسٹرڈ انجینیرز کی تعداد 13 ہزار 465 تھی جب کہ انجینیرنگ کے شعبے میں مملکت میں 297 بڑی فرمیں کام کررہی ہیں۔ سعودی عرب کی انجینیر کونسل میں غیرملکی انجینیرز کی رجسٹرڈ تعداد 1 لاکھ 86 ہزار 457 ہے جبکہ تکنیکی ماہرین کی تعداد 162410 ہے جو دوسرے ممالک سے تعلق رکھتے ہیں۔