.

ایران کو جوہری ہتھیار حاصل کرنے سے روکنے کے لیے ’سب کچھ‘ کر گزروں گا: نیتن یاہو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو نے ایک بار پھر اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ وہ ایران کو جوہری ہتھیار حاصل کرنے سے ہر قمیت پر روکیں گے۔ انہوں نے یہ بات اسرائیلی ٹی وی 'چینل 13' کو دیے گئے ایک انٹرویو میں کہی۔

نیتن یاہو کے مطابق ان کے اور امریکی صدر جو بائیڈن کے درمیان اچھے تعلقات ہیں مگر یہ تعلقات دوسروں کے کام ہر گز نہیں آئیں گے۔ اسرائیلی وزیر اعظم کا اشارہ ایران کی جانب تھا۔

نیتن یاہو کا مزید کہنا تھا کہ انہوں نے بائیڈن کو آگاہ کر دیا ہے کہ اسرائیل ایرانی نظام جیسے کسی شدت پسند نظام کے ساتھ کسی معاہدے کو خاطر میں نہیں لائے گا ، وہ ایران کو جوہری ہتھیار حاصل کرنے سے روکنے کی ہر ممکن کوشش کریں گے۔

وائٹ ہاؤس کے مطابق امریکا اور اسرائیل کے سینئر ذمے داران کے درمیان جمعرات کے روز دو طرفہ تزویراتی گروپ کے پہلے ورچوئل اجلاس میں ایران کے حوالے سے اندیشے زیر بحث آئے۔ اس معاملے میں اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کا موقف امریکی صدر جو بائیڈن کی انتظامیہ سے مختلف ہے۔

وائٹ ہاؤس کے زیر انتظام قومی سلامتی کونسل کی ترجمان ایملی ہارن کے مطابق امریکی قومی سلامتی کے مشیر جیک سولیون اور ان کے اسرائیلی ہم منصب میئر بن شبات نے دونوں ملکوں کے وفود کی سربراہی کی۔

گذشتہ ماہ ایک اسرائیلی ذمے دار یہ کہہ چکے ہیں کہ اسرائیل اس بات کی امید رکھتا ہے کہ ایرانی جوہری معاملے کے حوالے سے اختلاف کے سبب نیتن یاہو اور بائیڈن کے درمیان ذاتی تناؤ سے گریز کیا جائے گا ،،، اور دونوں شخصیات اس حوالے سے بات چیت کو اپنے سینئر مشیروں کے سامنے پیش کر دیں گے۔