.

سعودی عرب میں کرپشن اوراختیارات کے ناجائز استعمال پر241 افراد کے خلاف کارروائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے انسداد بدعنوانی کمیشن 'نزھہ' نے بتایا ہے کہ مملکت میں بدعنوانی کے خلاف اقدامات کا دائرہ مزید بڑھا دیا گیا ہے۔ مختلف سرکاری محکموں اور وزارتوں سے تعلق رکھنے والے سیکڑوں افراد کو بدعنوانی اور اختیارات کے ناجائز استعمال پر ملازمت سے معطل کرکے ان کے خلاف کارروائی شروع کی گئی ہے۔

'نزھہ' کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ وزارت داخلہ ، صحت ، بلدیہ اور دیہی امور ہاوسنگ، تعلیم، انسانی وسائل، سماجی ترقی کی وزارتوں ،،جنرل اتھارٹی برائے کسٹم اور سعودی پوسٹ کارپوریشن کے ملازمین سمیت 241 افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔ ان پر رشوت خوری،ملازمت اور اختیارات کے غلط استعمال اور دھوکہ دہی کے الزامات عاید کیے گئے ہیں۔

اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر پوسٹ کردہ تفصیلات انسداد بدعنوانی کمیشن نے کہا ہے کہ ملازمت سے معطل کیے گئے ملزمان کے خلاف قانونی چارہ جوئی مکمل کی جا رہی ہے۔ ان ملزمان سے تفتیش کے بعد انہیں عدالت میں پیش کیا جائے گا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ انسداد بدعنوانی کمیشن نے رجب کے دوران مملکت میں کرپشن کی روک تھام کے لیے 263 مانیٹرنگ دورے کئے۔ 757 مشتبہ ملزمان سے تفتیش کی گئی۔ 241 ملازمین کو معطل کرکے ان کے خلاف کارروائی شروع کی گئی۔