سعودی عرب کی لیبر عدالتوں سے ایک برس میں 47 ہزار مقدمات کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی وزارت انصاف نے مطابق رواں ہجری سال کے دوران مملکت کی لیبر عدالتوں کی طرف سے مجموعی طور پر 47،956 فیصلے صادر کیے گئے۔

سب سے زیادہ لیبر کیسز کے فیصلوں کا تعلق الریاض شہر سے ہے جہاں پر 16 ہزار 40 مقدمات نپٹائے گئے۔ اس کے بعد مشرقی سعودی عرب میں اس نوعیت کے 8 ہزار 194،مدینہ منورہ میں 4 ہزار 267 اور عسیر میں سب سے کم یعنی 1836 فیصلے جاری ہوئے۔

وزارت انصاف کے ایک اخباری بیان میں العربیہ نیٹ کو بتایا کہ لیبر عدالتوں میں آنے والے کیسز کی تیزی کے ساتھ سماعت اور ان کی رفتار کار میں تیزی ویژن 2030 کے اہداف ومقاصد کا حصہ ہے۔ دیگر عدالتوں کی طرح مملکت کی لیبر عدالتوں کو بھی جدید ترین الیکٹرانک نظام فراہم کیا گیا ہے۔

عدالتوں نے تمام قانونی چارہ جوئی کے طریقہ کار کے لیے ڈیجیٹل ٹرانسفارمیشن کے جدید مراحل حاصل کیے ہیں۔ ضبطی ریکارڈ ، الیکٹرانک آلات اور عدالتی سماعت کےدورانیے کا ریکاڈ مرتب کیا جا رہا ہے۔اس کے علاوہ عدالتوں فیصلوں کو انصاف کے مطابق بنانے اور عدالتی عمل میں شفافیت کے لیے بھی موثر اقدامات کیے گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں