.

شامی فورسز کا دمشق میں خودکش بم حملے کی سازش ناکام بنانے کا دعویٰ

سکیورٹی فورسز کی کارروائی میں تین مبیّنہ دہشت گرد ہلاک ، تین گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شامی سکیورٹی فورسز نے دارالحکومت دمشق کے نواحی علاقے میں ایک خودکش بم حملے کی سازش ناکام بنانے کا دعویٰ کیا ہے۔شامی فورسز نے تین مبیّنہ دہشت گردوں کو ہلاک کردیا ہے اور تین کو گرفتار کر لیا ہے۔

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا نے سوموار کےروز سکیورٹی ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس خودکش بم حملے میں بارود سے بھری جیکٹیں استعمال کی جانا تھیں مگر اس سازش کو دمشق کے نواح میں واقع دو قصبوں کے مکینوں کے تعاون سے ناکام بنا دیا گیا ہے۔ان دونوں قصبوں پر ماضی قریب میں باغی گروپوں کا کنٹرول رہا ہے۔

سانا نے یہ نہیں بتایا ہے کہ اس مبیّنہ خودکش حملے کی سازش کو کب ناکام بنایا گیا تھا۔اس نے ہلاک اور گرفتار مشتبہ افراد کے بارے میں بھی مزید کوئی تفصیل نہیں بتائی ہے۔

شامی صدر بشارالاسد کی حکومت نے تین سال قبل باغیوں سے جنگ بندی کے بعد ان کے زیرقبضہ الدوما اور دوسرے قصبوں کا کنٹرول واپس لے لیا تھا۔جنگ بندی کی ان سمجھوتوں میں مقامی عمائدین اوربشارالاسد کے اتحادی ملک روس نے اہم کردار ادا کیا تھا۔

دمشق کے ان نواحی علاقوں سے باغی گروپوں کے حامیوں اور ان کے خاندانوں کو شمال مغربی صوبہ ادلب میں منتقل کردیا گیا تھا اور شامی حکومت کا دمشق کے جنوب میں اردن اور اسرائیل کے علاقوں تک دوبارہ کنٹرول ہوگیا تھا۔ تاہم تب سے ان علاقوں میں تشدد کے واقعات گاہے گاہے رونما ہوتے رہتے ہیں۔