.

فائزہ ہاشمی کا خامنہ ای سے براہ راست ملاقات کا چیلنج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی حکومت کی ناقد اور سابق ایرانی صدر علی اکبر ہاشمی رفسنجانی کی صاحب زادی فائزہ ہاشمی رفسنجانی نے براہ راست ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای سے ملنے اور ان کے ساتھ سیاسی مسائل پر بحث ومباحثے پر زور دیا ہے۔

ایرانی ٹی وی چینل پر نشر ہونے والے'تنغنا' پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے فائزہ ہاشمی رفسنجانی نے کہا کہ 'بہتر ہے کہ میں ملک کی داخلہ اور خارجہ پالیسیوں براہ راست سپریم لیڈر سے بات کروں۔ اس طرح ہوسکتا ہے کہ میں اپنے ملک میں اصلاحات کی کوشش میں کامیاب ہوسکوں'۔

فائزہ رفسنجانی
فائزہ رفسنجانی

ایران کے مستقبل کے حوالے سے مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے فائزہ ہاشمی کا کہنا تھا کہ ایران کے موجودہ حالات حوصلہ افزا نہیں ہیں۔ میں بہت مایوس ہوں۔ اگرعالمی درجہ بندی میں دیکھا جائے تو ایران کا شمار اچھے ممالک میں آخری اور برے ممالک میں پہلے نمبروں پر ہوتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران میں کسی اور انقلاب کی کوئی ضرروت نہیں۔ ایک انقلاب کافی ہے۔ انہوں نے مہذب انداز مین سوشل میڈیا اور دیگر پلیٹ فارمز کے ذریعے احتجاج اور تنقید جاری رکھنے کی ضرورت پر زور دیا۔

ہاشمی رفسنجانی
ہاشمی رفسنجانی

انہوں نے اپنی اصلاح پسند جماعت سمیت دیگر اصلاح پسندوں کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا۔ فائزہ ہاشمی نے کہا کہ اصلاح پسند اپنی جماعتوں میں بھی جمہوری رویے پر عمل پیرا نہیں ہیں۔ ایران میں سب سیاسی قوتیں انتخابی انجینیرنگ میں لگی ہوئی ہیں۔