.

عراق کا عرب ملکوں‌ کے لیے کھلے پن کا مظاہرہ درست سمت میں اہم پیش رفت ہے: الصدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے سرکردہ شیعہ رہ نما مقتدیٰ الصدر نے ایک بیان میں وزیراعظم مصطفیٰ الکاظمی کے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے دوروں کی حمایت کرتے ہوئے انہیں خوش آئند قرار دیا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ عراق کا عرب ممالک کے لیے کھلے پن کا مظاہرہ کرنا درست سمت میں اہم قدم ہے۔
ایک بیان میں مقتدیٰ الصدر نے کہا کہ عراق کا عرب ممالک کے لیے کھلے پن کا مظاہرہ کرنا درست سمت میں اہم پیش رفت ہے۔ ایک ٹویٹ میں انہوں‌ نے لکھا کہ 'عراق، سعودی عرب اور امارات آپس میں بھائی ہیں'۔

مقتدیٰ الصدر کی طرف سے یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیاہے جب عراقی وزیراعظم نے سعودی عرب کے بعد متحدہ عرب امارات کا دورہ کیا ہے۔ مصطفیٰ الکاظمی نے کل اتوار کےروز متحدہ عرب امارات کے دورے کے دوران ابو ظبی کے ولی عہد اور مسلح افواج کے کمانڈر ان چیف الشیخ محمد بن زاید آل نھیان سے ملاقات کی۔ اس موقعے پر انہوں‌ نے کہا کہ امارات ہمیشہ عراقی قومی اور اس کے مفادات کےتحفظ اور استحکام کا متمنی رہا ہے۔

عراقی وزیراعظم مصطفیٰ الکاظمی نے کل اتوار کو اعلیٰ‌اختیاراتی وفد کے ہمراہ امارات کا دورہ کیا۔ ان کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ دونوں ممالک کی قیادت نے سرمایہ کاری، توانائی، ثقافت، تجارت، ٹرانسپورٹ، سروسز اور دوسرے شعبوں میں باہمی تعاون کو فروغ دینے پر بات چیت کی۔

وزیراعظم الکاظمی سعودی عرب کے سرکاری دورے کے بعد وطن واپس ہوگئے تھے۔ سعودی عرب کے دورے کے دوران انہوں نے مملکت کی قیادت کے ساتھ ملاقاتیں کیں اور دونوں ملکوں کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون کے معاہدے بھی طے پائے ہیں۔

سعودی عرب کے دورے کے دوران مصطفیٰ الکاظمی نے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز سے بھی ملاقات کی تھی۔

سعودی عرب کے دورے کے دوران رابطہ کونسل کی سطح پر ہونے والے مذاکرات کے ساتھ تجارت، معیشت، ثقاقت اور ابلاغی شعبوں سمیت پانچ معاہدوں پر دستخط کیے گئے۔