.

سعودی وزیر خارجہ شاہ سلمان کا اہم پیغام لے کر اردن پہنچ گئے، حکام سے ملاقاتیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اردن کی وزارت خارجہ نے اعلان کیا ہے کہ سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان گذشتہ روز دارالحکومت عَمّان پہنچے۔ بن فرحان ایک پیغام لے کر آئے ہیں جس میں باور کرایا گیا ہے کہ سعودی عرب تمام تر چیلنجوں کا سامنا کرنے میں مملکت اردن کے ساتھ کھڑا ہے۔

آج منگل کے روز جاری بیان میں واضح کیا گیا ہے کہ نائب وزیر اعظم اور وزیر خارجہ ایمن الصفدی نے سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان کا استقبال کیا۔ بن فرحان اردن کے فمراں روا شاہ عبداللہ دوم کے نام خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کا پیغام لے کر پہنچے۔ پیغام میں باور کرایا گیا ہے کہ سعودی عرب شاہ عبداللہ دوم کی جانب سے اردن اور اس کے مفادات کے تحفظ کے واسطے کیے جانے تمام اقدامات کی مکمل حمایت کرتا ہے۔

دوسری جانب اردن کے وزیر خارجہ نے فرماں روا شاہ عبداللہ دوم کے حوالے سے اس امر کو گراں قدر قرار دیا کہ ریاض کا موقف ہمیشہ سے اردن کی حمایت کا حامل رہا ہے۔

دونوں ملکوں کے وزرائے خارجہ نے باور کرایا کہ سعودی عرب اور اردن اور ان کی قیادت گہرے تاریخی تعلقات کے ساتھ مربوط ہیں۔ علاوہ ازیں تمام شعبوں میں ان تعلقات کو بہتر بنانے کے لیے کام جاری ہے۔

بن فرحان اور الصفدی نے زور دیا کہ دونوں مملکتوں کا امن و استحکام "جزو لا ینفک" ہے اور دونوں ممالک تمام تر چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے ساتھ کھڑے ہیں۔

یاد رہے کہ سعودی فرماں روا شاہ سلمان نے اتوار کی شام ٹیلی فون پر اردن کے فرماں روا شاہ عبداللہ دوم سے بات چیت کی تھی۔ اس موقع پر شاہ سلمان نے اردن کے ساتھ مکمل یک جہتی کو باور کرایا تھا۔ مزید یہ کہ سعودی عرب شاہ عبداللہ دوم کے ان تمام اقدامات میں ساتھ دے گا جو وہ اپنے ملک کے امن و استحکام کی حفاظت کے واسطے کر رہے ہیں۔