.

نابینا اطالوی گلوکار نے سعودی عرب میں موسیقی کنسرٹ کو چار چاند لگا دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عالمی شہرت یافتہ اطالوی اوپرا گلوکار آندریا بوسیلی نے سعودی عرب کے شمال مغربی شہر العلا میں منعقدہ کنسرٹ میں اپنے فن کا مظاہرہ کر کے محفل کو چار چاند لگا دیے۔ سعودی عرب میں بوسیلی کا یہ تیسرا موسیقی کنسرٹ ہے۔

تقریب کا انعقاد العلا گورنری میں واقع الحجر آثار قدیمہ کے مقام پر کیا گیا تھا۔ العلا میں قائم یہ تھیٹر اپنی قدیم تاریخ رکھتا ہے۔ یہاں پر آج سے 3 ہزار سال قبل نبطی بادشاہ دادان کے دور میں ایک تھیٹر بنایا گیا تھا۔

اس مقام کی تاریخی اہمیت کے اعتبار سے اقوام متحدہ کے سائنسی اور ثقافتی ادارے 'یونیسکو' نے اسے عالمی ثقافتی میراث میں شامل کیا اور عالمی فہرست میں شامل ہونے والا یہ سعودی عرب کا پہلا تاریخی مقام ہے۔

اطالوی فنکار آندریا بوسیلی، جو اوپرا کے لیجنڈ ہیں، نے 8 اپریل کو سعودی عرب کے علاقے العلا کے تاریخی مقام الحجر میں پہلی بار ایک محفل موسیقی کا کنسرٹ میں فن اپنے کے جوہر دکھائے۔

یہ کنسرٹ ایک ایسے وقت میں منعقد کیا گیا ہے جب دو روز قبل سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے تاریخی آثار قدیمہ کی سر زمین العُلا میں ’’وقت کے ساتھ ساتھ سفر‘‘ اسکیم کے لیے ڈیزائن ویژن کا افتتاح کیا ہے۔اس کا مقصد العُلا میں ذمے دارانہ اور پائیدار انداز میں بحالی اور احیائے نو ہے۔

کرونا وبا کی وجہ سے محفل موسیقی میں 300 افراد نے شرکت کی۔ اس موقع پر'کووڈ ۔ 19' سے تحفظ کے لیے ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کیا گیا۔

نابینا اطالوی موسیقار نے کھلے آسمان تلے اپنے اکسٹرا کے ذریعے پہاڑوں، نوادرات کے نوشتہ جات اور مدھم روشنیوں کے درمیان موسیقی کی رنگ بکھیرے۔