.

سعودی عرب: منی لانڈرنگ مافیا کے عناصر کو106 سال قید اور جرمانوں کی سزائیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں پبلک پراسیکیوشن نے انکشاف کیا ہے کہ منی لانڈرنگ میں ملوث مقامی اور غیرملکی عناصر پر مشتمل مافیا کے عناصر کو مجموعی طور پر 106 سال قید اور بھاری جرمانوں کی سزائیں سنائی گئی ہیں۔ پراسیکیوشن کی طرف سےجاری بیان میں کہا گیا ہے کہ 5 مقامی باشندوں نے اشیائے خوردو نوش کی درآمد کے لیے 7 مختلف ناموں سے رجسٹریشن کرا رکھی تھی۔ انہوں نے بینک اکاؤنٹ قائم بنائے اور عرب ممالک کے16 عناصر کو شامل کرکے ان کے ذریعے بیرون ملک بھاری مقدار میں رقم منتقل کی۔

پبلک پراسیکیوشن کی تحقیقات کے مطابق ملزمان پر غیر قانونی رقوم رکھنے، نقل و حمل اور منی لانڈرنگ جیسے الزامات عاید کیے گئے۔ عدالت نے ملزمان کے خلاف فیصلہ سناتے ہوئےملزمان کو مجموعی طور پر 106 سال قید اور18 لاکھ ریال جرمانہ کی سزا سنائی گئی اور ملزمان کے قبضےسے 5 ملین ریال کی نقد رقم اور اور دو ملین ریال مالیت بنک کھاتے منجمد کیے گئے۔

فیصلے میں بیرون ملک بھیجی گئی 40 کروڑ 65 لاکھ ریال کی رقم ضبط کرنا، سعودی ملزمان کو سزا پوری ہونے کے بعد بیرون ملک سفر پرپابندی اور غیرملکیوں کی ملک بدری اور دوسرے ملکوں کو بھیجی گئی رقومکی واپسی کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے۔

پبلک پراسیکیوشن نے شہریوں اور غیرملکی باشندوں سے مطالبہ کیا کہ وہ بینک کھاتوں اور تجارتی اجازت ناموں کو غیرقانونی مقاصد کے لیے استعمال کرنے کی کسی بھی کوشش کی نشاندہی کریں تاکہ سماج دشمن عناصر کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جاسکے۔