.

اداروں کی باہمی رسا کشی نطنز جوہری پلانٹ کی حفاظت میں خلل کا باعث بنی:ایرانی نائب صدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی صدر حسن روحانی کے نائب اسحاق جہانگیری نے انکشاف کیا ہے کہ حال ہی میں نطنز نامی جوہری پلانٹ میں آتش زدگی کے واقعے کو ریاستی اداروں کی باہمی رسا کشی کا شاخسانہ قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اداروں کے درمیان جاری باہمی محاذ آرائی جوہری پلانٹ میں آتش زدگی اور اسے نقصان پہنچانے کا باعث بنی۔

اسحاق جہانگیری کے بیان سے قبل ایران کے دوسرے ریاستی عہدیداروں نے نطنز جوہری پلانٹ میں آتش زدگی کی تصدیق کی تھی تاہم ان کا کہنا تھا کہ آتش زدگی سے جوہری پلانٹ کو کوئی نقصان نہیں پہنچا ہے۔

ایران کے نائب صدر نے کہا کہ اداروں کے اندرونی اختلافات جوہری تنصیب نطنز کی سیکیورٹی میں لاپرواہی کا باعث بنے اور اس کے نتیجے میں نطنز پلانٹ پر حملہ کیا گیا۔

اسحاق جہانگیری نے سیکیورٹی اداروں پر کڑی تنقید کی اور کہا کہ ادارے جوہری پلانٹ پر ہونے والے حملے کو روکنے میں ناکام رہے ہیں۔ قبل ازیں ایرانی وزارت خارجہ نے نطنز پلانٹ میں آتش زدگی کے واقعے کی ذمہ داری اسرائیل پرعاید کی تھی۔

ایرانی صدر کے نائب نے جوہری پلانٹ کی سیکیورٹی میں لاپرواہی برتنے والے عہدیداروں کے خلاف فوری کارروائی کرنے اور ان کا کڑا محاسبہ کرنے پر زور دیا۔