.

سعودی استغاثہ نے خاتون سبزی فروش کے ساتھ بد اخلاقی کے مرتکب شہری کو طلب کر لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں استغاثہ نے اس شخص کو طلب کر لیا ہے جس نے سبزی فروخت کرنے والی ایک خاتون کا وڈیو کلپ بنا کر اسے سوشل میڈیا پر نشر کر دیا تھا۔

ٹویٹر پر صارفین کی ایک بڑی تعداد نے وڈیو کلپ میں نظر آنے والے ایک سعودی شہری کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ اس شخص نے مذکورہ وڈیو Snap Chat پر اپنے اکاؤنٹ پر جاری کی تھی۔ وڈیو میں یہ شخص سبزی فروخت کرنے والی ایک عمر رسیدہ خاتون کے ساتھ بد اخلاقی کے ساتھ پیش آ رہا ہے۔

وڈیو میں شہری نے اس بات کی سخت انداز میں مذمت کی کہ عمر رسیدہ خاتون سوشل سیکورٹی کے حصول کی درخواست دینے کے بجائے دن میں سبزیاں فروخت کر رہی ہے۔ شہری کے نزدیک خاتون کو اپنے گھر میں رہنا چاہیے۔

سعودی خاتون ایڈوکیٹ رحمہ العوفی کے مطابق وڈیو بنانے والے شہری نے جو کیا وہ متعدد قاعدوں کی خلاف ورزی شمار ہوتی ہے۔ اس میں کیمرے والے موبائل کے ذریعے کسی کی نجی زندگی کو ضرر پہنچانا، دوسروں کی بدنامی کا ذریعہ بننا اور سوشل میڈیا پر کسی کے معاملے کو پھیلانا شامل ہے۔ اس مد میں زیادہ سے زیادہ ایک برس قید اور پانچ لاکھ ریال جرمانے تک کی سزا ہو سکتی ہے۔

خاتون ایڈوکیٹ کا مزید کہنا ہے کہ مذکورہ سعودی شہری نے بنا کسی استحقاق دوسروں کی زندگی میں مداخلت کا ارتکاب کیا۔

رحملہ العوفی نے واضح کیا کہ وڈیو بنانے والے شخص کے لیے زیادہ بہتر تھا کہ وہ متعلقہ سرکاری اداروں کو اطلاع دے دیتا۔ اس شخص کو وڈیو بنا کر اسے پوسٹ کرنے اور دوسروں کے نجی معاملے میں مداخلت سے گریز کرنا چاہیے تھا۔