.

الجوف میں یمنی فوج کا اچانک حملہ ، حوثی ملیشیا کا بھاری نقصان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صوبے الجوف کے جنوب مشرق میں سرکاری فوج کے ہاتھوں حوثی ملیشیا کے درجنوں ارکان مارے گئے۔ مقامی ذرائع ابلاغ نے آج اتوار کے روز بتایا کہ یمنی فوج نے حوثی باغیوں کے ایک گروپ کو الجدافر کے محاذ پر آگے بڑھنے کا موقع دیا اور پھر اچانک ان کو گھیرے میں لے کر حملہ کر دیا۔ اس کے نتیجے میں درجنوں حوثی باغی ہلاک اور زخمی ہو گئے۔

ادھر الجوف صوبے میں ہی الحزم شہر کے مشرق میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے حوثی ملیشیا کے مختلف ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔ اس حملے میں باغیوں کا جانی اور مادی نقصان ہوا۔

یمنی فوج نے چند روز قبل الجوف ، تعز اور مارب کے محاذوں پر متعدد نئے ٹھکانوں کو آزاد کرا لیا تھا۔ اس دوران یمنی فوج کو اتحادی طیاروں کی معاونت حاصل رہی۔

یاد رہے کہ حوثی ملیشیا نے الجوف صوبے میں انسانی حقوق کی کئی خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا۔ ان میں قتل، حملوں، تشدد، ایذا رسانی، گرفتاریوں، انسانی امداد کی لوٹ مار، اسکول کے بچوں کی بھرتی اور شہریوں کو بے گھر کرنا شامل ہے۔ یہ انکشافات الجوف میں انسانی حقوق اور ذرائع ابلاغ کی کمیٹی کی ایک رپورٹ میں سامنے آئے۔