.

القدس میں اسرائیلی کارروائیاں بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی ہیں: سعودی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیر خارجہ نے اسرائیل کی جانب سے فلسطینیوں کو ان کے گھروں سے بے دخل کرنے کی کوششوں کی مذمت کی ہے۔

شہزادہ فیصل بن فرحان کا کہنا تھا کہ ’اسرائیلی فوج کے غیر قانونی اقدامات خصوصاً رمضان کے دوران، بین الاقوامی چارٹرز کی صریح خلاف ورزی ہیں۔‘

سعودی وزیر خارجہ کا یہ بیان اسرائیل کی جانب سے فلسطینی علاقوں میں قوانین کی خلاف ورزی کے حوالے مشاورت کے لیے بلائے گئے عرب لیگ وزرائے خارجہ کی کونسل کے ہنگامی اجلاس میں سامنے آیا۔

شہزادہ فیصل نے کہا کہ ’مملکت اسرائیلی فوج کی جانب سے الاقصٰی مسجد میں دھاوا بولنے، نمازیوں کا تقدس مجروح کرنے اور فلسطینیوں پر حملوں کی مذمت کرتی ہے۔‘

سعودی وزیر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ ’مملکت دو ٹوک انداز میں فلسطینیوں کو ان کے گھروں سے نکالنے اور ان کی سرزمین پر اپنا اختیار نافذ کرنے کا اسرائیلی مسترد کرتی ہے۔‘

سعودی عرب ایسے کسی بھی یکطرفہ اقدام کی مذمت کرتا ہے جس کی وجہ سے بین الاقوامی قراردادوں کی خلاف ورزی ہو اور امن عمل کی بحالی کی راہ میں رکاوٹ پڑے۔

شہزادہ فیصل کا کہنا تھا کہ ’مملکت فلسطینیوں کے ساتھ کھڑی ہے اور ان تمام کوششوں کی حمایت کرتی ہے جو مسئلہ فلسطین کے مکمل حل کے لیے ہیں۔ سعودی عرب 1967 کی سرحدوں کی بنیاد پر فلسطینیوں کی آزاد ریاست کے قیام کی حمایت کرتا ہے، جس کا دارالحکومت مشرقی یروشلم ہو، جو بین الاقوامی فیصلوں اور عرب امن منصوبہ کے مطابق ہے۔‘

سعودی عرب نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ اسرائیل کی جانب سے ہونے والی قوانین کی خلاف ورزیاں روکنے اور فلسطینیوں کے تحفظ کے لیے اقدامات کرے۔