.

ڈیڑھ سال کے تعطل کے بعد سعودی عرب میں کل سے بیرون ملک سے سفری آمد ورفت کا آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کرونا وبا کی وجہ سے سعودی عرب میں ایک سال چار ماہ سے تعطل کا شکار فضائی سفر کل سوموار سے بحال ہو رہا ہے۔ سعودی عرب اور دوسرے ممالک کےدرمیان زمینی اور سمندری آمد ورفت بھی کل سے بحال ہورہی ہے جس کے لیے کرونا ایس اوپیز اور پروٹوکول کے مطابق تمام ترانتظامات مکل کرلیے گئے ہیں۔

دوسری جانب سعودی عرب کی انجمن برائے سفر وسیاحت کے رکن ھانی العمیری نے کہا ہے کہ سعودی عرب نے ڈیڑھ سال سے تعطل کا شکار فضائی،بحری اور بری سفر سوموار کے روز بحال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ڈیڑھ سال کے بعد سیاحتی شعبےکے مراکز، دفاتر اور ایجنسیاں 30 فی صد اپنی سرگرمیاں شروع کریں گی۔ عزیزو اقارب سے ملاقاتوں ، ہنی مون اور سیاحت کے پروگرامات کل سے بہ تدریج بحال ہو رہے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے العمیری نے کہا کہ سعودی عرب میں سفروسیاحت کے شعبے میں 2092 ایجنسیاں کام کرتی ہیں۔ جن ممالک کے شہری سعودی عرب میں سیاحت کے لیے آنا چاہتے ہیں انہیں مملکت میں آمد ورفت کے لیے ایس اپیز کے بارے میں بتا دیا گیا ہے۔ بیرون ملک سے آنے والے تمام افراد کو صحت کےحوالے سے احتیاطی تدابیر اختیار کرنا ہوں گی۔
ان کا کہنا تھا کہ کئی ملکوں کے باشندوں کا مملکت میں داخلہ ممنوع ہے یا بعض ممالک سے آنےوالوں کو کئی روز تک قرنطینہ میں رکھا جائے گا۔

العمیری کا کہنا تھا کہ فوری طور پر متحدہ عرب امارات، بحرین اور مصر کے لیے زمینی، فضائی اور سمندری آمدو رفت کھولی جا رہی ہے۔ دوسرے مرحلے میں انڈونیشیا، جارجیا اور یوکرائن کے باشندوں کو مملکت میں سیاحت کے لیے آنے کی اجازت ہوگی۔