.

سعودی عرب: بین الاقوامی سفر کی بحالی سے قبل پلیٹ فارم اور گذرگاہیں مسافروں سے بھر گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی طرف سے 'ایس اوپیز' کے تحت بین الاقوامی سفرکی بحالی کے اعلان کے ساتھ ہی پورے ملک کے ہوائی اڈوں ، بری اور بحری گذرگاہوں پر مسافروں کی بڑی تعداد امڈ آئی ہے۔
اتوار کی شام العربیہ ٹی وی چینل کی کیمرہ ٹیم نے مختلف گذرگاہوں اور الریاض میں قائم شاہ خالد بین الاقوامی ہوائی اڈے کا جائزہ لیا۔ مسافروں‌کی بڑی تعداد بیرون ملک سفر کے لیے مقررہ وقت سے پہلے ہوائی اڈے اور دیگر مقامات پر جمع ہو چکی تھی۔

خیال رہے کہ سعودی عرب نے آج 17 مئی بہ مطابق 5 شوال المکرم بہ روز سوموار مقامی وقت کے مطابق دن ایک بجے سے بین الاقوامی سفر بحال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ سعودی عرب نے کرونا وبا کی وجہ سے ڈیڑھ سال سے بین الاقوامی سفر پرپابندی عاید کررکھی تھی جو آج کے روز سے مرحلہ وار اٹھائی جا رہی ہے۔ بیرون ملک سفر کرنے اور باہر سے آنے والے مسافروں کے لیے حکومت نے صحت کے حوالے سے سخت احتیاطی تدابیر پرعمل درآمد یقینی بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

اگرچہ سعودی عرب نے بین الاقوامی آمد ورفت بحال کرنے کا اعلان کیا ہے مگر بعض ممالک جہاں پر کرونا وبا ابھی زیادہ ہے مسافروں‌کو آمد ورفت کی اجازت نہیں۔

تقریبا ایک سال چار ماہ کی بندش کے بعد شہریوں کو بیرون ملک سفر کی اجازت ملنے پرشہری مسرت اور خوشی سےسرشار ہیں۔ شہریوں نے حکومت کی طرف سے بین الاقوامی سفر کے حوالے سے کیے گئے انتظامی معاملات پر بھی اطمینان کا اظہار کیا ہے۔

دوسری جانب سعودی عرب کے ڈائریکٹوریٹ برائے پاسپورٹس کا کہنا ہے کہ تمام بین الاقوامی گذرگاہوں کو مسافروں کی آمد ورفت کے لیے کھول دیا گیا ہے۔ پاسپورٹس ڈاریکٹوریٹ کے مطابق آج سوموار دن ایک بجے سے بین الاقوامی پروازیں، بری آمد ورفت اور سمندری راستے سے سفر کا باقاعدہ آغاز ہو جائے گا۔