.

کشیدگی میں کمی اور دشوار، اسرائیل نے غزہ کی بجلی بند کرنے کی دھمکی دے دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عالمی برادری کی طرف سے بار بار جنگ بندی کی اپیلوں کے باوجود فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی پر اسرائیلی فوج کی وحشیانہ کارروائیوں کا سلسلہ جاری ہے۔

دوسری طرف فلسطینی تنظیمیں اسلامی تحریک مزاحمت 'حماس' اور اسلامی جہاد بھی اسرائیل پر مسلسل راکٹ حملے جاری رکھے ہوئے ہیں۔

العربیہ چینل کے نامہ نگاروں کے مطابق اسرائیل نے غزہ کی پٹی کی بجلی بند کرنے کی دھمکی دی ہے۔ اسرائیل کا کہنا ہے کہ غزہ میں اسلحہ اور گولہ بارود ذخیرہ کرنے کے لیے بنائی گئی سرنگوں پر تباہ کرنے کا عمل پہلی ترجیح کے طور پر جاری رہے۔

b174ea39-8a54-42cf-82ab-180553b82b83
b174ea39-8a54-42cf-82ab-180553b82b83

اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاھو نے فلسطینیوں کے راکٹ حملوں دو اسرائیلی فوجیوں‌ کی ہلاکت کے بعد سخت جواب دینے کی دھمکی دی ہے۔ جنوبی اسرائیل میں یہودی کالونیوں کی قیادت سے ملاقات میں نیتن یاھو نے کہا کہ غزہ میں انتہا پسندوں کے خلاف کارروائی مزید کئی روز جاری رہے گی۔

درایں اثنا امریکی وزیر خارجہ لائڈ آسٹن نے اپنے اسرائیلی ہم منصب بینی گینٹز سے ٹیلیفون پر بات چیت کرتے ہوئے غزہ میں تشدد کا سلسلہ فوری روکنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ ان کاکہنا ہے بے گناہ فلسطینیوں اور اسرائیلیوں‌کی ہلاکتیں ناقابل قبول ہیں۔

اسرائیلی بمباری کے بعد تباہی کے اثرات
اسرائیلی بمباری کے بعد تباہی کے اثرات

اسرائیلی وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ کوئی شخص یا جگہ ہمارے حملوں سے محفوظ نہیں۔ ہمارے پاس غزہ میں کئی اہداف ہیں اور ہم ہرہدف کو نشانہ بنائیں گے۔

قبل ازیں منگل کو غزہ سے عسقلان کے علاقے میں داغے گئے راکٹ حملے میں دو اسرائیلی ہلاک اور کم سے کم 10 زخمی ہو گئے تھے۔

c58738d7-d44a-41ed-a6f1-be36dec1627e
c58738d7-d44a-41ed-a6f1-be36dec1627e

غزہ کی پٹی میں کشیدگی دوسرے ہفتے میں جاری ہے جس میں اب تک اسرائیلی حملوں میں 237 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔ شہدا میں زیادہ تر بچے اور خواتین ہیں۔ فلسطینیوں‌ کے راکٹ حملوں میں 12 صہیونی ہلاک ہوئے ہیں۔