.

سعودی عرب : ریکروٹنگ فرمز گھریلو ملازمین کے حوالے سے انشورنس کوریج فراہم کریں گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں کابینہ نے ریکروٹمنٹ فرموں کو اس بات کا پابند کر دیا ہے کہ وہ اپنے صارفین کی طرف سے گھریلو ملازمین کو اجرت پر بھرتی کرنے کے معاہدے میں انشورنس کوریج بھی شامل کریں۔

یہ فیصلہ منگل کے روز کابینہ کے اجلاس میں کیا گیا۔ اجلاس کا انعقاد وڈیو کال کے ذریعے سعودی عرب کے فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی صدارت میں ہوا۔

مذکورہ معاہدوں میں شامل انشورنس کوریج کا مقصد آجر اور ملازم دونوں کے حقوق کو یقینی بنانا ہے جب کہ ملازم اپنا کام جاری رکھنے سے انکار کر دے یا پھر معاہدے کی مدت پوری نہ کرے۔

فیصلے کے مطابق پہلے دو سال کے لیے انشورنس کے اخراجات ریکروٹنگ فرموں اور آجروں کے بیچ طے پانے والے معاہدوں میں شامل کی جائے گی۔ دو سال بعد آجر کی جانب سے ملازم کے قیام کی تجدید کی صورت میں انشورنس کوریج اختیاری ہو گی۔

کابینہ نے اجلاس میں مملکت میں سرمایہ کاری کی وزارت منظم کرنے کی بھی منظوری دی۔

کابینہ نے وزیر سیاحت یا ان کی نیابت کرنے والے کو سیاحت کے شعبے میں دو مفاہمتی یادداشتوں کے حوالے سے سلطنت عُمان اور فرانس کے ساتھ بات چیت کے اختیارات سونپ دیے۔ اسی طرح اقوام متحدہ کے زیر انتظام عالمی ادارہ سیاحت کے ساتھ مذاکرات کا اختیار بھی سونپا گیا ہے۔ اس کا مقصد برقی تعلیم کے طریقے سے انسانی صلاحیتوں کو ترقی دینا ہے۔