.

سعودی عرب میں عوامی مطالبے پر مساجد کے بیرونی لاؤڈ اسپیکروں کااستعمال محدود کردیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں سوشل میڈیا پر 'مساجد کے بیرونی لاؤڈ اسپیکروں میں نماز' کی ادائی کا معاملہ ٹاپ ٹرینڈ کرن لگا۔ دوسری سماجی کارکنوں نے وزارت مذہبی امور پر زور دیا ہے کہ نماز جمعہ کے سوا باقی تمام نمازوں کو مساجد کے بیرونی لاؤڈ اسپیکروں پر ادا کرنے کے بجائے صرف اندورنی لاؤڈ اسپیکروں پر ادا کرنے کا ضکم صادر کیا جائے۔ عام نمازوں میں صرف اذان اور اقامت کو بیرونی لاؤڈ اسپیکروں پر ادا کیا جائے۔

سماجی کارکنوں کا کہنا ہے کہ نماز جمعہ کےموقعے پربیرونی لاؤڈ اسپیکروں کے استعمال کا جواز اس لیے ہوسکتا ہے کہ نمازیوں کی تعداد عام نمازوں کی نسبت زیادہ ہوتی ہے۔ بہت سے نمازی مساجد کے اندرونی لاؤڈ اسپیکروں کی آواز نہیں سن پاتے اور ان تک امام کی آواز نہیں پہنچتی۔ اس کے علاوہ موجودہ وبا کے دوران چونکے سماجی فاصلہ بھی ضروری ہے۔ اس لیے نماز جمعہ کے موقعے پر نماز میں بیرونی لاؤڈ اسپیکروں کو کو استعمال کیا جانا چاہیے۔

وزارت مذہبی امور کی وضاحت
اسی سیاق میں وزارت مذہبی امور نے سوشل میڈیا پر عوام کے مطالبے کے بعد ملک بھر کی مساجد میں نماز جمعہ کے سوا دیگر تمام نمازوں کے موقعے پر مساجد کے بیرونی لاؤ اسپکر بند کرنے کا حکم دیا ہے۔ عام نمازوں میں صرف اذان اور اقامت کے موقعے پر بیرونی لاؤڈ اسپیکر استعمال کیے جاسکیں گے۔

وزارت مذہبی امور کا کہنا ہے کہ مساجد کی انتظامیہ نے بیرونی لاؤڈ اسپیکروں کے استعمال کے حوالے سے وضع کردہ طریقہ کار پر فوری طور پرعمل درآمد شروع کردیا گیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ وزارت مذہبی امور سوشل میڈیا اور دیگر پلیٹ فارم کے ذریعے مساجد میں لاؤڈ اسپیکرکے استعمال کےحوالے سے جاری کردہ نئے احکامات پرعمل درآمد کی نگرانی کررہی ہے تاکہ نمازیوں کے خشوع وخضوع کی ہرممکن سہولت فراہم کی جا سکے۔