.

معذور افراد کی پارکنگ کی جگہ گھیرنے سے روکنے کے لیے سعودی نوجوان کی تخلیقی تدبیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں ایک نوجوان نے ٹکنالوجی کی مدد سے ایک ایسی تدبیر ایجاد کی ہے جس کے ذریعے معذور افراد کی پارکنگ کی جگہ پر دوسرے لوگوں کو گاڑی کھڑی کرنے سے روکا جا سکے گا۔

سعودی نوجوان عبدالعزیز القرشی کے مطابق اس کی تخلیقی تدبیر گاڑی کو پارکنگ میں داخل کرنے کے ساتھ شروع ہوتی ہے۔ اس کے بعد سینسر کی جانب سے اسکینر کو پیغام بھیجا جاتا ہے کہ گاڑی آ رہی ہے۔ اس کے بعد اگر معذور افراد کا خصوصی کوڈ مل گیا تو اسکینر گاڑی کے اگلے حصے کو اسکین کر لیتا ہے۔

القرشی نے مزید بتایا کہ اسکینر آخر میں رکاوٹ کو نیچے ہو جانے کے لیے پیغام بھیجتا ہے تا کہ معذور شخص اس جگہ گاڑی پارک کر سکے۔ اس سلسلے میں صرف معذور افراد کی گاڑی کے اگلے حصے میں کوڈ ہونا چاہیے۔ کوڈ نہ ہونے کی صورت میں رکاوٹ نہیں کھلے گی۔

سعودی نوجوان نے بتایا کہ یہ ایجاد شمسی توانائی کی چارجنگ سے کام کرے گی۔ اس کا مقصد پارکنگ کے حوالے سے خلاف ورزیوں کو روکنا اور معذور افراد کو ان کے لیے مختص پارکنگ کی جگہائیں حاصل کرنے میں آسانی پیدا کرنا ہے۔ نوجوان نے اس ایجاد کے لیے سعودی حکام سے پیٹینٹ کے حصول کے لیے درخواست دے دی ہے۔

عبدالعزیز القرشی جدہ میں کنگ عبدالعزیز یونیورسٹی میں زیر تعلیم ہے۔