.

کویتی ولی عہد کا مملکت کا دورہ تعلقات کی اہمیت باور کراتا ہے: سعودی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان کا کہنا ہے کہ کویت کے ولی عہد شیخ مشعل الاحمد الجابر الصباح کا منصب سنبھالنے کے بعد پہلے بیرونی دورے پر سعودی عرب آنا ،،، دونوں برادر ملکوں کے بیچ تعلقات کی اہمیت باور کراتا ہے۔

سعودی وزیر خارجہ نے توقع ظاہر کی ہے کہ کویتی ولی عہد کا دورہ دونوں ممالک کے درمیان سیاسی تعلقات مضبوط بنانے کے حوالے سے کئی مثبت اثرات مرتب کرے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ "مملکت سعودی عرب کویت کے ساتھ نہایت مضبوط تعلقات رکھتی ہے۔ یہ تعلقات مملکت کے بانی شاہ عبدالعزیز بن عبدالرحمن آل سعود کے زمانے سے ہیں۔ مملکت کے قیام کے سلسلے میں ریاض کو واپس لینے کے لیے شاہ عبداللہ کویت سے ہی نکلے تھے۔ عراق کے حملے کے موقع پر بھی مملکت نے کویتی قیادت اور عوام کی بھرپور سطح پر میزبانی انجام دی تھی۔

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی (ایس پی اے) کے مطابق سعودی وزیر خارجہ نے بتایا کہ دونوں ممالک تجارتی تبادلے کے حجم کو اعلی ترین سطح پر دیکھنے کے خواہاں ہیں۔ سال 2019ء کے دوران میں یہ حجم 8.39 ارب ریال رہا۔ کویت کے لیے سعودی عرب کی برآمدات کی مالیت 7.83 ارب ریال اور کویت سے درآمدات کی مالیت 1.56 ارب ریال رہی۔

شہزادہ فیصل بن فرحان کا کہنا ہے کہ کرونا کی وبا نے پوری دنیا کی معیشت پر منفی اثرات مرتب کیے۔ اس دوران میں سعودی عرب اور کویت کے وزرائے صحت کے درمیان مستقل اور براہ راست رابط کاری کا سلسلہ جاری رہا۔ علاوہ ازیں کویت کی منڈیوں کے استحکام کے واسطے مملکت نے اپنے زمینی اور سمندری راستوں کو استثنائی طور پر کھولے رکھا تا کہ کویت جانے والے سامان کی کھیپیں گزر سکیں۔ اسی طرح مملکت سے کویت کے لیے