سعودی عرب: سیکیورٹی اہلکار کے قتل میں ملوث داعشی کا سر قلم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے کل بدھ کے روزایک بیان میں کہا ہے کہ ایک سیکیورٹی اہلکار کے قتل میں ملوث ’داعشی‘ جنگجو کو سنائی گئی سزا پر عمل درآمد کرتے ہوئے جدہ میں مجرم کا سرقلم کر دیا گیا۔

وزارت داخلہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ مکہ معظمہ کے علاقے جدہ گورنری میں ایک سیکیورٹی اہلکار کے قتل میں ملوث مصر سے تعلق رکھنے والے ولید سامی الزھیری کا 23 شوال کو سر قلم کردیا گیا۔

سزاپانے والے داعشی نے کچھ عرصہ قبل جدہ میں ایک پٹرول پمپ پر نماز فجر ادا کرنے میں مصروف سیکیورٹی اہلکار ھادی بن مسفر القحطانی کو قتل کردیا تھا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ مجرم نے سیکیورٹی اہلکار کو نماز میں تنہا پا کرموقعے سے فایدہ اٹھایا اور نماز کے دوران اس پرچاقو سے وار کرکے اسے قتل کردیا تھا۔کارروائی کے بعد مجرم جائے وقوعہ سےفرار ہوگیا تھا تاہم سیکیورٹی اہلکاروں نے تعاقب کرکے اسے گرفتار کرلیا۔ اس نے عدالت کے سامنے جرم کا اعتراف کرنے کے ساتھ ’داعش‘ کے ساتھ اپنے تعلق کا اعتراف کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں