.

سعودی کابینہ کے اجلاس میں متعدد فیصلوں کی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی کابینہ نے منگل کے روز ہونے والے اپنے ورچوئل اجلاس میں متعدد فیصلوں کی منظوری دی۔ اجلاس سعودی عرب کے فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی صدارت میں ہوا۔

اجلاس کے دوران میں کابینہ نے "پبلک پینشن ایجنسی" کو "جنرل آرگنائزیشن فار سوشل انشورنس" میں ضم کرنے کی منظوری دی۔ اسی طرح "مہد اسپورٹس اکیڈمی" کے نام سے ایک ادارہ قائم کرنے کی بھی منظوری دی گئی۔ اس کا مقصد کھیلوں سے متعلق سرگرمیوں اور صلاحیتوں کو ترقی دینا ہے۔

علاوہ ازیں سکوک کی حامل اراضی کی سرمایہ کاری سے متعلق ماحولیات ، پانی اور زراعت کی وزارت کے فیصلے کو نافذ العمل کیا گیا۔

اجلاس کے آغاز میں مملکت کی جانب سے حرمین شریفین کی مبارک خدمت اور حجاج، معتمرین اور زائرین کی بھرپور دیکھ بھال کے معاملات پر روشنی ڈالی گئی۔ علاوہ ازیں مذکورہ افراد کی سلامتی اور سیکورٹی کے لیے خصوصی اقدامات کا بھی جائزہ لیا گیا۔

بعد ازاں سعودی فرماں روا نے کابینہ کو اس تحریری خط کے مندرجات سے آگاہ کیا جو انہیں سلطنت عمان کے سلطان ہیثم بن طارق بن تیمور کی جانب سے ارسال کیا گیا۔ علاوہ ازیں کابینہ کو جمہوریہ کرغستان کے صدر جناب صادیر جباروف کی جانب سے موصول ہونے والی ٹیلی فون کال کے حوالے سے بھی جان کاری دی گئی۔

وزیر مملکت اور قائم مقام وزیر اطلاعات ڈاکٹر عصام بن سعد بن سعید نے سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی (ایس پی اے) کو بتایا کہ کابینہ نے گذشتہ دنوں کے دوران مملکت سعودی عرب کی اپنے کئی برادر اور دوست ممالک کے ساتھ ہونے والی تمام مشاورت اور بات چیت کا مجموعی جائزہ لیا۔

اسی طرح سعودی کابینہ نے افغانستان میں ہونے والے امن اعلان پر بھی غور کیا۔ مملکت کے زیر سرپرستی مکہ مکرمہ میں ہونے والے اس معاہدے پر افغانستان اور پاکستان کے سینئر علمائے کرام نے دستخط کیے۔ اس معاہدے کا مقصد افغانستان میں جاری تنازع اور بحران کا حل تلاش کرنا ہے۔