.

انتخابات میں ایرانی عوام کو آزادانہ اور شفاف انتخابی عمل سے محروم رکھا گیا: امریکا

ایرانی عوام کو آزادانہ اور شفاف انتخابی عمل سے محروم رکھنا افسوسناک ہے: امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے ہفتے کے روز ایک بیان میں کہا ہے کہ ایرانی عوام صدارتی انتخابات میں "آزادانہ اور منصفانہ انتخابی عمل" میں حصہ لینے سے محروم ہیں جو کہ انتہائی افسوسناک بات ہے۔

ایرانی صدارتی انتخابات میں سخت گیر قدامت پسند ابراہیم رئیسی کی فتح کے بارے میں واشنگٹن کی طرف سے جاری کردہ پہلے تبصرے میں وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ "ایرانی باشندے آزادانہ اور منصفانہ انتخابی عمل میں اپنے قائدین کے انتخاب کے حق سے محروم ہیں۔ "

ترجمان نے مزید کہا کہ امریکا ایرانی جوہری پروگرام پر بات چیت جاری رکھے گا اور اس سلسلے میں اپنے اتحادیوں اور شراکت داروں کے ساتھ مل کر کام کرے گا۔

یہ بیان ایک ایسے وقت سامنے آیا جب ایرانی حزب اختلاف کے ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ جُمعہ کو ہونے والے صدارتی انتخابات میں ٹرن آؤٹ بہت کم یعنی صرف 10 فی صد رہا جبکہ ایرانی وزارت داخلہ نے اس کے برعکس ٹرن آؤٹ کا دعوی کیا ہے۔

ہفتے کے روز ایرانی وزیرداخلہ عبد الرضا رحمانی فضلی نے اعلان کیا کہ صدارتی امیدوار ابراہیم رئیسی نے 17.8 ملین ووٹوں کے ساتھ انتخابات میں کامیابی حاصل کی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ رئیسی نے 61.95 فی صد ووٹ حاصل کیے ہیں۔

وزیر داخلہ نے مزید کہا کہ 28.9 ملین افراد نے انتخابات میں ووٹ دیا اور مجموعی ٹرن آؤٹ یا 48.8فی صد رہا۔