.

سمندر کی گہرائیوں کی کھوج لگانے والا سعودی فوٹوگرافر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی کیمرہ مین علی بختاور 14 برس سے "سمندری کائنات" کے جمال کو اپنے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کر رہے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے علی نے بتایا کہ انہوں نے 2007ء میں فوٹوگرافی شروع کی۔ ایک سال بعد انہیں پیشہ وارانہ مہارت حاصل ہو گئی۔

علی کے مطابق غوطہ خوری اور امدادی کارروائیوں کا تربیت کار ہونے کی وجہ سے انہیں سمندری کائنات کو کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کرنے سے محبت ہے۔

علی نے بتایا کہ "سمندر کی گہرائیوں میں ہم ہمیشہ کیمرے کے رنگ اور فلیش کو مساوی رکھنے کے خواہش مند ہوتے ہیں۔ ساتھ ہی ہم سمندری کائنات کو نمایاں اور اجاگر کرنے کے بھی خواہاں ہوتے ہیں"۔ علی کے مطابق وہ متعدد ایسی تصاویر لے چکے ہیں جو دلوں کو موہ لیتی ہیں۔ ان میں نمایاں ترین تصویر نادر نوعیت کی مینڈک مچھلی کی تھی۔

علی نے بتایا کہ ان کی خواہش ہوتی ہے کہ تصویر کشی کے دوران سمندر کے اندر ان کی گہرائی 60 فٹ سے زیادہ نہ ہو۔ اتنی گہرائی میں مطلوبہ روشنی میسر ہوتی ہے جو اعلی کوالٹی کے مناظر محفوظ کرنے میں مدد گار ہوتی ہے۔

علی کے مطابق انہوں نے سمندری کائنات کی کئی تصاویر لی ہیں۔ ان میں ڈولفن، مینڈک مچھلی، سمندری گھوڑا، شارک، طوطا مچھلی وغیرہ شامل ہیں۔