.

نجران : جڑواں بہن بھائیوں کے کچلے جانے کا اندوہ ناک حادثہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں جڑواں بہن بھائیوں کے گاڑی تلے روندے جانے کے واقعے نے لوگوں کو رنجیدہ کر دیا ہے۔ اللہ تعالی نے شادی کے 14 سال بعد ان جڑواں بچوں کی شکل میں والدین کو اولاد کی نعمت سے نوازا تھا۔

اس سلسلے میں دونوں بچوں "فیصل اور حور" کے ماموں عبداللہ يحيى آل لعجم نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو تفصیلات سے آگاہ کیا۔ انہوں نے بتایا کہ ان کی بہن کا گھرانہ تفریح کی غرض سے نجران صوبے میں واقع کنگ فہد پارک گیا تھا۔ بچوں کا باپ رات کا کھانا لینے کے لیا گیا تو فیصل اور حور پارک میں اپنے گھر والوں اور دیگر عزیزوں کے ساتھ رک گئے۔ فیصل اور حور نے بچوں کی اسکوٹر لے کر چلانا شروع کر دی۔ اس دوران میں وہ ایک تاریک راستے پر نکل آئے جہاں دوسری جانب سے ایک بڑی عمر کا شخص گاڑی چلاتا ہوا آ رہا تھا۔ اندھیرے کی وجہ سے وہ فیصل اور حور کو نہ دیکھ سکا جس کے نتیجے میں دونوں بہن بھائی گاڑی کے نیچے کچلے گئے۔ فیصل نے موقع پر ہی دم توڑ دیا جب کہ حور شدید زخمی ہو گئی۔

گاڑی چلانے والے عمر رسیدہ شخص نے دونوں بچوں کو فوری طور پر ہسپتال پہنچایا۔ فیصل پہلے ہی دم توڑ چکا تھا جب کہ اس کی بہن حور کو انتہائی نگہداشت کے شعبے میں رکھا گیا ہے۔ پیڑو کی ہڈی ٹوٹ جانے کے بعد اس کی حالت تشویش ناک ہے۔

بچوں کے ماموں نے بتایا کہ گاڑی چلانے والے عمر رسیدہ شخص کو اللہ کی رضا کے لیے معاف کر دیا گیا ہے۔