.

برطانیہ میں شہریوں کو کرونا ویکسین لگانے والی پہلی سعودی خاتون

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ریحان جمعہ اسکالر شپ پر بیرون ملک زیر تعلیم وہ پہلی سعودی خاتون ہیں جو رضا کارانہ طور پر برطانیہ اور شمالی آئر لینڈ میں 21 برس سے زیادہ عمر کے افراد کو کرونا ویکسین لگا رہی ہیں۔ ریحان University of Reading Henley Business School سے پی ایچ ڈی مکمل کر رہی ہیں۔ ان کا موضوع Administrative Leadership and Entrepreneurship ہے۔

ریحان کے مطابق انہوں نے اس رضا کارانہ کام میں شریک ہونے کا فیصلہ برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن کے اعلان کے بعد کیا۔ جانسن نے برطانیہ میں شہریوں کو کرونا وائرس کی ویکسین لگانے کے لیے ملک میں مقیم غیر ملکی افراد کو نامزدگی کا موقع دینے کا فیصلہ کیا تھا۔ اس کا مقصد وائرس کے پھیلاؤ کو روکنا اور شہریوں کی زیادہ سے زیادہ تعداد کو ویکسین کی جلد از جلد فراہمی یقینی بنانا ہے۔

ریحان نے بتایا کہ "2021ء کے آغاز پر میں نے St. John's Ambulance مرکز میں بطور رضا کار کام کرنے کے لیے درخواست دی جو منظور ہو گئی۔ مجھے 22 گھنٹوں کی تربیت دی گئی اور میں نے برطانوی وزارت صحت کی جانب سے 21 سرٹفکیٹ حاصل کیے۔ میں نے آکسفورڈ یونیورسٹی میں اپنی تربیت جاری رکھی۔

ریحان نے اس بھرپور تجربے کے حوالے سے اپنی مسرت کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایسا رضا کارانہ کام ہے جس پر وہ فخر محسوس کرتی ہیں