.

اردن : شامی پناہ گزینوں کے کیمپ میں قابل تجدید توانائی کا سعودی منصوبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی ترقیاتی فنڈ کے چیف ایگزیکٹو سلطان بن المرشد نے کل بدھ کے روز اردن میں شامی پناہ گزینوں کے "الازرق کیمپ" میں بجلی کے ایک منصوبے کا افتتاح کیا۔ یہ منصوبہ قابل تجدید توانائی سے کام کرے گا۔ سعودی حکومت کی جانب سے 92 لاکھ ڈالر مالیت کا یہ منصوبہ بطور امداد پیش کیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں سعودی ترقیقاتی فنڈ کو پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن کا تعاون حاصل رہا۔

افتتاح کی تقریب میں اردن کے سینئر ذمے داران اور پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کے ہائی کمشین کے نمائندوں نے شرکت کی۔ الازرق کیمپ کا یہ منصوبہ قابل تجدید توانائی کے شعبے میں دنیا میں اپنی نوعیت کا پہلا منصوبہ شمار کیا جا رہا ہے۔ یہ منصوبہ 54 ہزار سے زیادہ شامی پناہ گزینوں اور 10 ہزار سے زیادہ ٹھکانوں کو مفت توانائی فراہم کرے گا۔

اس موقع پر سعودی ترقیاتی فنڈ کے چیف ایگزیکٹو سلطان بن المرشد کا کہنا تھا کہ پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن کے ساتھ سعودی ترقیاتی فنڈ کا تعلق 10 برس سے زیادہ پرانا ہے۔ سعودی عرب اس فنڈ کے ذریعے شامی پناہ گزینوں اور ان کی میزبان حکومتوں کو 30 کروڑ ڈالر کی سپورٹ فراہم کر چکا ہے۔ ساتھ ہی اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن برائے پناہ گزین کے تعاون سے 7.8 کروڑ ڈالر کے 17 منصوبے مکمل ہو چکے ہیں۔ الازرق کیمپ میں سعودی ترقیقاتی فنڈ کی امداد بجلی کے نیٹ ورک تک محدود نہیں بلکہ طبی دیکھ بھال اور علاج کی مد میں 30 لاکھ ڈالر مختص کیے گئے۔ اس رقم سے 37 ہزار سے زیادہ پناہ گزین مستفید ہو چکے۔ اس موقع پر اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن برائے پناہ گزین کے علاقائی سطح پر خارجہ تعلقات کے سینئر ذمے دار ڈاکٹر مامون محسن نے سعودی عرب اور سعودی ترقیاتی فنڈ کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ بجلی کا نیا منصوبہ کیمپ میں مقیم پناہ گزینوں کی روز مرہ کی زندگی کے لیے نہایت اہمیت کا حامل ہے۔

ادھر اردن میں سعودی عرب کے سفیر نائف السدیری نے کہا کہ الازرق پناہ گزین کیمپ میں اپنی نوعیت کا یہ نیا منصوبہ ان بھرپور کوششوں کا عکاس ہے جو خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی حکومت کی جانب سے اپنے شامی برادارن اور ان کی میزبان حکومتوں کے واسطے کی جا رہی ہیں۔

یاد رہے کہ سعودی ترقیاتی فنڈ انسانی امور کی سپورٹ کی ایک طویل تاریخ رکھتا ہے۔ اقوام متحدہ کی جانب سے بن الاقوامی سطح پر انسانی امدادی کوششوں کی سپورٹ میں یہ فنڈ ایک اہم شراکت دار رہا ہے۔ سعودی عرب اس فنڈ کے ذریعے اقوام متحدہ کے زیر سایہ کام کرنے والی 14 بین الاقوامی تنظیموں کی سپورٹ کے لیے تقریبا ایک ارب ڈالر کی رقم پیش کر چکا ہے۔