.

خامنہ ای دنیا بھر کے آمروں میں سرفہرست ہیں: شیریں عبادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

انسانی حقوق کی معروف ایرانی کارکن اور وکیل شیریں عبادی نے ایران کے رہبر اعلی علی خامنہ ای کو دنیا بھر کے آمروں میں پہلے نمبر پر قرار دیا ہے۔

شیریں نے یہ بات دنیا بھر میں آزادی رائے اور آزادی صحافت سے متعلق تنظیم کی ایک رپورٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ ایرانی نظام حکومت مختلف طریقوں سے صاحب رائے افراد کا منہ بند کرانے اور اپوزیشن کی آواز کو خاموش کرانے پر کام کر رہا ہے۔ ان طریقوں میں تشدد ، جیل یہاں تک کہ موت کے گھاٹ اتار دینا بھی شامل ہے۔

نوبل انعام یافتہ شیریں نے مزید کہا کہ ایرانی حکومتی نظام صحافیوں کے خلاف کریک ڈاؤن اور آزادی اظہار پر قیود کے نت نئے اسلوب کے حوالے سے طویل تاریخ رکھتا ہے۔

انسانی حقوق کی خاتون کارکن کے مطابق گذشتہ 42 برسوں کے دوران میں کئی ایرانی قیدیوں پر عائد الزامات پر نظر کی جائے تو وہ آزادی اظہار سے متعلق ہیں۔ اس لیے کہ صحافی اور یہاں تک کہ عام شہری بھی اگر تحریری طور پر یا سوشل میڈیا پر اپنی رائے کے اظہار کا ارادہ کرتے ہیں تو انہیں گرفتاری اور عدالتی کارروائی کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔

شیریں عبادی اس سے پہلے انکشاف کر چکی ہیں کہ عدالتی حکام کی جانب سے ہزاروں قیدیوں کی رہائی کے فیصلے کے باوجود ایران نے متعدد سیاسی قیدیوں کو رہا کرنے سے انکار کر دیا۔ عدالتی فیصلہ جیلوں میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی روک تھام کے سلسلے میں سامنے آیا تھا۔

واضح رہے کہ ایرانی حکومت کا صحافیوں کے خلاف کریک ڈاؤن اندرون ملک تک محدود نہیں۔ تہران نے گذشتہ برس ملک سے باہر مثلا برطانیہ اور ترکی میں بھی اپوزیشن سے تعلق رکھنے والے صحفیوں کو دھمکانے کی مہم کی لپیٹ میں لیا تھا۔ ان افراد کو سڑکوں پر سے اغوا کر لیے جانے کی دھمکیاں دی گئی تھیں۔