.

سعودی عرب: دو عمارتیں قومی ثقافتی ورثے کا حصہ قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں ہیریٹیج اتھارٹی نے دو تاریخی عمارتوں کو مملکت کے تاریکی ورثے کی فہرست میں درج کیا ہے۔ پہلی عمارت ہے الریاض کی میونسپیلٹی کے لیے سرکاری صدر مقام کے طور پر قائم کی گئی تھی جب کہ دوسری عمارت سعودی دارالحکومت میں "المرقب پرنٹنگ پریس" کمپنی کے صدر دفتر کے طور پراستعمال کی جاتی تھی۔

سعودی ہیریٹیج اتھارٹی نے انکشاف کیا کہ اس نے شاہی فرمان نمبر (ایم / 3) کے ذریعہ جاری کردہ نوادرات ، عجائب گھروں اور شہری ورثہ کے قانون کے آرٹیکل 45 مجریہ 1436ھ کے چوتھے پیراگراف کے تحت قومی شہری ثقافتی ورثہ میں اندراج کیا ہے۔

کمیشن کا مقصد "ریاض سنٹرل ڈویلپمنٹ" منصوبے کے تحت سعودی عرب میں ان مقامات کی تاریخی اہمیت کی وجہ انہیں قومی ثقافتی ورثے کا حصہ قرار دیتا ہے۔ املاک کو قومی ثقافتی ورثے کا حصہ قرار دینے کے بعد ان کی بحالی، مرمت اور ان کی حفاظت کے لیے ضروری اقدامات کیے جاتے ہیں۔

اتھارٹی نے ٹویٹر پر اپنے آفیشل اکاؤنٹ کے توسط سے ایک ٹویٹ میں لکھا کہ "ہیریٹیج اتھارٹی نے ریاستی میونسپلٹی بلڈنگ اور المرقب پرنٹنگ پریس کو شہری ثقافتی ورثہ میں شامل کیا ہے۔ ان املاک کو قومی ثقافتی ورثے میں شامل کرنے کا مقصد ان کی تاریخی اور ثقافتی اہمیت کا اعتراف کرتے ہوئے انہیں قومی ثقافتی ورثہ کے طور پرمحفوظ کرنا ہے۔

ریاض میونسپلٹی کی عمارت 1359 ھ / 1940 میں الظہیرہ حوطہ خالد میں قائم کی گئی تھی۔ میونسپلٹی ریاض کے جنوب مغرب میں دوسرے ہیڈ کوارٹر میں منتقل ہونے سے قبل یہاں سے اپنا انتظام چلا رہی تھی۔سنہ 1374 ھ / 1954 ء میں یہ عمارت دوسری جگہ منتقل ہوئی۔

جہاں تک المرقب پرنٹنگ کمپنی کی عمارت کا تعلق ہے تو یہ 1374 ہجری میں قائم ہوئی۔ مصنف حماد الجاسر 200 افراد کی معاونت سے عمارت تعمیر کی تھی۔