.

’کان‘ فلمی میلے میں سعودی عرب کی نمایاں شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عرب دنیا اور مشرق وسطیٰ کی فلم انڈسٹری میں سعودی عرب کا نمایاں کردار مملکت کی شوبز اورفلمی صنعت کی دنیا میں ترقی کی عکاسی کرتا ہے۔

حال ہی میں ’’کان‘‘ فلم فیسٹیول میں شریک سعودی پویلین نے عرب دنیا اور مشرق وسطی میں فلم انڈسٹری کے لیے مملکت کے نمایاں کردار کا مظاہرہ پیش کیا ہے۔ اس فلمی میلے میں مملکت کی تاریخ میں اپنی نوعیت اور شرکا کی تعداد، اقدامات کی سطح پر سب سے بڑی نمائندگی کی ہے۔ سعودی عرب کی ’کان‘ فلم فیسٹیول میں شرکت ایک قابل ذکرعلاقائی جہت کی شکل اختیار کرگیا۔ یہ سب کچھ مملکت کی قیادت کی فلمی صنعت کی لامحدود حمایت کا نتیجہ ہے جس میں خاص طور پر سنیما کے شعبے اور بالعموم ثقافتی شعبے پذیرائی فراہم کی گئی ہے اور اسے وژن 2030 اہداف میں شامل کیا گیا ہے۔

سعودی عرب کی سرکاری نیوز ایجنسی ’ایس پی اے‘ مزید کہا کہ "کان‘‘ فلم فیسٹیول میں سعودی عرب کے پویلین میں شریک فریقین کے اعلان کردہ سعودی اقدامات نے عرب فلمی صنعت کے مستقبل اور اس کی عالمی سطح پر رسائی کے لیے ایک روڈ میپ مہیا کیا ہے۔ یہ ایک اہم سنگ میل ہے جوبہت سے سابقہ اقدامات کی تیز رفتارترقی کا باعث بنا۔ سعودی عرب کی طرف سے فلمی دنیا میں فلم سازی کی رفتار میں اضافہ ہوا۔ سعودی عرب کی کاوشوں سے فلم پروڈکشن اور تخلیقی صلاحیتوں کی دنیا میں نمایاں ترقی ہوئی۔ سعودی عرب میں بحرالاحمر فلم فیسٹیول کی طرف سے 40 ملین ڈالر کی گرانٹ بھی وصول ہوئی۔

اسی طرح عبد العزیز سنٹر برائے عالمی ثقافت "اثرا" نے سعودی اور عرب فلم بینوں کے مابین شراکت میں دو نئی فلموں "بحر السلام" اور "دی ویلی روڈ" کی تیاری کا اعلان کیا ہے۔

سینما گھروں میں پروڈکشن کو اپنانے اور صنعت میں ہنر اور اداکاروں کی مدد کرنے کے سلسلے میں سعودی اقدامات کی تنوع اور جامعیت نے عربی سنیما سسٹم کی طرف سے تمام فریقوں کی جوش اور اخلاقی اور مادی تحریک دی ہے۔