.
سعودی معیشت

فِچ کی جانب سے سعودی عرب کی کریڈٹ درجہ بندی "A" برقرار ، فیوچر آؤٹ لُک "مستحکم"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عالمی کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی "فِچ" نے مستقبل کے حوالے سے سعودی عرب کے لیے "مستحکم" نقطہ نظر کا اعلان کیا ہے۔ ایجنسی نے تیل کی قیمتوں میں بڑے پیمانے پر اضافے اور سعودی حکومت کی جانب سے مالیاتی صورت حال کو قابو میں رکھنے پر کاربند ہونے کا حوالہ دیا ہے۔

فِچ نے سعودی عرب کی "A" کریڈٹ ریٹنگ کو برقرار رکھا ہے۔

ایجنسی کے مطابق حالیہ برسوں میں کمی کے باوجود سعودی عرب کی بیرونی مالی رقوم کا حجم اب بھی بڑا ہے۔

فِچ نے توقع ظاہر کی ہے کہ 2021ء میں مجموعی مقامی پیداوار میں سعودی عرب کا بجٹ خسارہ 3.3% تک کم ہو جائے گا۔ مزید یہ کہ 2020ء سے سعودی شہریوں میں بے روزگاری میں کمی واقع ہوئی ہے۔

رواں ماہ جولائی میں عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) نے توقع ظاہر کی ہے کہ سعودی عرب کی معیشت کرونا کی وبا کے مقابلے میں بہتر طور پر بحال ہوئی ہے۔ مزید یہ کہ مملکت کی نان آئل اکانومی رواں سال 4.3% سے نمو پائے گی۔ اسی طرح حقیقی مجموعی مقامی پیداوار کی نمو کا تناسب 2.4%. ہو گا۔