.
کرونا وائرس

کرونا ضوابط کی خلاف ورزی پر بھاری جرمانہ اور تین سال کے لیے سفری پابندی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے اعلان کیا ہے کہ جو شخص ایسے ممالک میں سفر کرتا ہے جس میں کرونا کی وجہ سے آنے جانے پر پابندی عاید ہے ایسے شخص کا تین سال تک سعودی عرب میں داخلہ بند ہو گا۔

وزارت داخلہ کے ذرائع کا مزید کہنا ہےکہ اگر ممنوعہ ممالک کا سفر کوئی سعودی شہری کرتا ہے تو وطن واپسی پر اسے سخت باز پرس اور جرمانہ کیا جائے گا اور اسے تین سال ملک سے باہر رہنا ہو گا۔

سعودی وزارت داخلہ نے بھی کرونا وائرس میں نئی پیش رفت کے سبب ممنوعہ ممالک کا سفر کرنے کے خلاف انتباہ کی تجدید کی ہے۔

وزارت داخلہ کے اعلان کردہ ممنوعہ ممالک میں براہ راست سفر یا کسی دوسرے ملک کے ذریعے ان ممالک کے سفر پر بھی سعودی عرب میں داخلے کے لیے تین سال کی پابندی عاید ہو گی۔ اس کے علاوہ کوئی ایسا ملک جس میں کرونا وبا پر قابو نہیں پایا گیا یا اس ملک میں کرونا کی تبدیل شدہ شکل تیزی کے ساتھ پھیل رہی ہے تو اس ملک کے سفر پر بھی پابندی ہو گی۔ خلاف ورزی کرنے والے کو تین سال کے لیے سعودی عرب میں داخل نہیں ہونے دیا جائےگا۔

وزارت داخلہ نے شہریوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ وبا سے متاثرہ مقامات سے دور رہیں اور جن خطوں میں وبا کی وجہ سے عدم استحکام موجود ہے وہاں کا سفر نہ کریں۔ اس کے علاوہ اندرون اور بیرون ملک سفر کے دوران کرونا کی روک تھام کے لیے ضروری احتیاطی تدابیر پر عمل کریں۔