.

’کاکسٹ‘ پروگرام: نئی نسل میں تحقیق اورایجادات کی مہارت کو فروغ دینا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شاہ عبدالعزیز سٹی فارسائنس اینڈ ٹیکنالوجی (کے اے سی ایس ٹی) نے کنگ عبدالعزیز فاؤنڈیشن برائے تخلیقی صلاحیت (موھبہ) کے تعاون سے سائنس اور ٹیکنالوجی ریسرچ پروگرام 2021 کی افزودگی جنریشن کا آغاز کیا ہے جس کا مقصد طلباء کی سائنسی اور علمی قابلیت اور عملی مشق کے ذریعے تحقیق ، ترقی اور ایجادات کے میدان میں ترقی کے لیے ان کی مدد کرنا ہے۔

’KACST‘ میں ریسرچ اینڈ انوویشن سپورٹ کے جنرل سپروائزر ڈاکٹر عبدالعزیز المالک نے پروگرام کے افتتاح کے دوران ایک تقریرکرتے ہوئے کہا کہ KACST لیبر کی ضروریات کے مطابق انسانی کیڈرز کی ترقی کی اہمیت پر یقین رکھتا ہے۔ مارکیٹ ابھرتے ہوئے مُحققین اور موجدین کو سائنس اور ٹیکنالوجی ریسرچ پروگرام کی افزودگی جنریشن کے ذریعے مستقبل کی ضروریات کا اندازہ لگانےاور ان پر قابو پانے کے لیے کوالیفائی کرنے کی کوشش کرنا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس پروگرام کا مقصد طلباء کو سائنسی تحقیق سے متعارف کروا کے مقامی کمیونٹی میں جدت کے کلچر کو فروغ دینا اور علمی معیشت کی طرف منتقلی میں اس کی اہمیت کے علاوہ تحقیق، ترقی اور جدت اور اصلاح کے شعبوں میں صلاحیتوں کو فروغ دینا ہے۔

تیسرے انٹرمیڈیٹ گریڈ سے دوسرے سیکنڈری گریڈ تک کے پروگرام کے معیار اور شرائط پر پورا اترنے والے 50 طلباء و طالبات اس پروگرام میں حصہ لے رہے ہیں۔ پروگرام کے لیے ایسے طلبا کا انتخاب کیا گیا ہے جو سائنسی تحقیق کے میدان میں گہری دلچسپی کا مظاہرہ کرتے اور فیلڈ میں تجربے کےخواہش مند ہوں۔

چار ہفتوں کے پروگرام میں مواد سائنس ، جوہری سائنس، توانائی اور پانی، حیاتیات اور ماحولیات، خلائی اور ہوا بازی، اور مواصلات اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے شامل ہیں۔