.

سعودی عرب:منی لانڈرنگ کیس،140 ملین ریال ضبط، چار ملزمان کو24 سال قید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے پبلک پراسیکیوشن کے ایک سرکاری ذریعے نے بتایا ہے کہ منی لانڈرنگ کے ایک بڑے کیس میں چار ملزمان سے تفتیش مکمل کرنے کے بعد ان کے قبضے سے 10 کروڑ 40 لاکھ ریال کی رقم برآمد کی گئی ہے اور ملزمان کو چوبیس سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ملزمان میں ایک مقامی جب کہ تین غیرملکی شامل ہیں۔

مقامی مرکزی ملزم غیرملکیوں کے بنک کھاتوں کو رقوم کو بیرون ملک منتقلی کے لیے استعمال کررہاتھا اور اس کی طرف سے انہیں ماہناہ تیس ہزار ریال کی خطیر رقم بھی ادا کی جاتی تھی۔

عدالتی حکم نامہ میں انہیں 24 سال کے عرصے تک قید میں ڈالنا ، مقامی ملزم کو قید کی سزا پوری ہونے کے بعد اتنے عرصے کے لیے بیرون ملک سفر سے روکنے اور غیرملکیوں کو قید کی سزا مکمل ہونے کے بعد ملک بدر کرنے کی سزا سنائی گئی ہے۔ ملزمان کی جانب سے اڑھائی ملین ریال کی گرم مشروبات کے ایک کنٹینر کے نیچے چھپائی گئی تھی۔ اسے بھی برآمد کرلیا گیا ہے۔

ذرائع نے پبلک پراسیکیوشن اور کنٹرول اینڈ انفیرنس باڈیز کے درمیان مشترکہ کوششوں اور ہم آہنگی کی طرف توجہ دلاتے ہوئے کہا کہ اس کیس میں وزارت تجارت ، جنرل اتھارٹی برائے زکوۃٰ، ، ٹیکس اور کسٹمز ، اور سعودی سنٹرل بینک کی طرف سے تعاون کیا گیا۔