.

نئے تعلیمی سال کے دوران حاضری کا طریقہ کار کیا ہو گا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی سکولوں میں نئے تعلیمی سال کے لیے 12 سال اور اس سے زیادہ عمر کے طلبہ کی حاضری کے لیے شاہی منظوری کا اجرا ہو گیا ہے۔

وزارت تعلیم نے اعلامیہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’نئے تعلیمی سال کے لیے اعلی کمیٹی کی سفارشات کی روشنی میں طلبہ کی حاضری کے متعلق شاہی منظوری جاری ہوئی ہے‘۔

وزارت نے کہا ہے کہ ’تعلیمی اداروں میں طلبہ کی واپسی کی ترتیب اس طرح طے ہوئی ہے کہ تمام یونیورسٹیز، انسٹی ٹیوٹ اور 12 سال سے زیادہ عمر کے طلبہ کی تعلیمی اداروں میں طلبہ سمیت تدریسی و انتظامی عملے کی حاضری کی اولین شرط کرونا ویکسین کی دو خوراکیں ہیں‘۔

’مذکورہ اداروں سے وابستہ افراد میں سے جنہیں کورونا ویکسین کی خوراکیں دستیاب نہیں وہ اتوار 22 اگست سے پہلے مخصوص لنک کے ذریعہ اپنا اندراج کرائیں‘۔

’وہ طلبہ جنہوں نے ابھی تک ویکسین نہیں لگوائی یا دوسری خوراک کے منتظر ہیں انہیں چاہئے کہ وزارت صحت کی ویب سائٹ کے رجوع کریں جہاں انہیں اولین ترجیح کی بنیاد پر وقت فراہم ہوگا‘۔

ایسے تعلیمی ادارے جن میں 12 سال سے کم عمر طلبہ زیر تعلیم ہیں، ان کے بارے میں وزارت نے کہا ہے کہ ’ان میں تدریسی وانتظامی عملے کے لیے ویکسین کی دو خوارکیں لازمی ہیں‘۔ ’جبکہ 12 سال سے کم عمر کے طلبہ کی حاضری ملک کی 70 فیصد آبادی کو ویکسین لگانے سے مشروط ہے یا پھر ان کی حاضری 30 اکتوبر2021 کو ہوگی‘۔

وزارت نے واضح کیا ہے کہ ’ملک کی 70 فیصد آبادی کو مذکورہ تاریخ سے پہلے ویکسین لگائی گئی یا 30 اکتوبر سے پہلے 70 فیصد کا ہدف حاصل کیا گیا، دونوں صورتوں میں 12 سال سے کم عمر کے طلبہ کی سکولوں میں حاضری ہو گی‘۔

وزارت نے کہا ہے کہ ’وزارت صحت اور کرونا کے انسداد کے لیے کام کرنے والی کمیٹی کی ہدایات پر عمل کرتے ہوئے تعلیمی اداروں میں ایس او پیز پر نافذ ہوں گے‘۔

’وزارت تعلیم حفاظتی تدابیر پر عمل کرتے ہوئے طلبہ کی محفوظ واپسی کے علاوہ محفوظ تعلیمی ماحول فراہم کرے گی۔ وزارت تدریسی و انتظامی عملے کو ہدایت کرتی ہے کہ وہ پہلی فرصت میں ویکسین کی دونوں خوراکیں مکمل کرلیں‘۔