ڈیڑھ سال بعد بچوں کے لیے مسجد نبویﷺ کے دروازے کھل گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب میں کرونا وبا کی وجہ سے گذشتہ ایک سال سے زائد عرصے سے نہ صرف بڑی عمر کے مسلمانوں کو مسجد نبویﷺ میں عبادت میں مشکلات کا سامنا رہا بلکہ بچوں پربھی مسجد نبویﷺ میں داخلے پرپابندی عاید رہی ہے۔ تاہم کرونا وبا کے اثرات کم ہونے اور دو خوراکیں لینے والے بچوں کو مسجد نبویﷺ میں داخلے کی اجازت دی گئی ہے۔

مسجد نبویﷺ کے انتظامی امور کی ذمہ دار ایجنسی کی طرف سے جاری تصاویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ بچے بھی مسجد نبویﷺ میں موجود ہیں۔ مسجد نبویﷺ میں آنے والے بچے بہت زیادہ خوش وخرم دکھائی دیتے ہیں۔

ایجنسی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ حکومت نے کرونا ویکسین کی پہلی دو خوراکیں لگوانے والے12 سے 18 سال کے بچوں کو مسجد نبویﷺ میں داخل ہونے اور نماز ادا کرنے کی اجازت دی ہے۔

مسجد نبویﷺ میں آنے والے بچوں کو نماز ادا کرتے اور تلاوت قرآن پاک میں مصروف دیکھا جا سکتا ہے۔ بچوں کو تقریبا ڈیڑھ سال کے بعد مسجد نبویﷺ میں داخلے کی اجازت دی گئی ہے۔

درایں اثنا سعودی عرب کی وزارت حج وعمرہ کا کہنا ہے کہ 12 سے 18 سال کے بچوں کو کرونا ویکسین کی دو خوراکیں لینے کی شرط پر عمرہ کی ادائی کی اجازت دی گئی ہے۔

سعودی عرب کی وزارت صحت نے 30 جون کو 12 سے 18 سال کی عمر کے بچوں کو کرونا کی پہلی خوراک دینا شروع کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں