.
یمن اور حوثی

یمن: عرب اتحاد کی بمباری میں ایرانی ماہر سمیت دس حوثی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کی بحالی کے لئے سرگرم عرب اتحاد کی کارروائی میں ایک ایرانی مشیر اور دو کرنیلوں سمیت دس حوثی جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

یمن کے وزیر اطلاعات معمر الاریانی نےبتایا ہے کہ یہ ہلاکتیں مآرب میں حوثی مورچوں پر بمباری کے نتیجے میں واقع ہوئی ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ "ان حملوں کے نتیجے میں ہمیں یمن میں ایرانی مداخلت اور اس سے یمنی سلامتی اور استحکام کو درپیش خطرات کا علم ہوتا ہے۔"

الاریانی کے مطابق "ایران نے پاسداران انقلاب کے سینکڑوں ماہرین کو یمن بھیجا ہے تاکہ وہ فیلڈ میں یمنی حوثیوں کے فوجی آپریشنز کی قیادت کر سکیں۔ اس کے علاوہ ایران نے ڈرون اور بیلسٹک میزائلوں سمیت دیگر اسلحہ بھی حوثی باغیوں کو فراہم کیا ہے تاکہ وہ خطے میں ایران کے توسیعی عزائم میں اپنا حصہ ڈال سکیں۔"

یمنی وزیر کے مطابق "ایرانی ماہر حیدر سرجان انفینٹری کی ٹریننگ اور بحالی کے امور کا ماہر تھا اور وہ ماہ جون تک یمن کے مغربی ساحل پر ٹیکٹکل منصوبہ بندی کا ذمہ دار تھا جس کے بعد اس کی جگہ لبنان کی حزب اللہ کے مصطفیٰ الغراوی نے لے لی۔ مصطفیٰ الغراوی بھی عرب اتحاد کے حملوں میں جان سے ہاتھ دھو بیٹھا ہے۔

معمر الاریانی نے بین الاقوامی برادری، اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل کے مستقل اراکین سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ یمنی معاملات میں ایران کی مداخلت پر سنجیدہ موقف اختیار کریں۔