.
یمن اور حوثی

حوثیوں کی ’مالی لائف لائن‘ لبنانی شہری کی گرفتاری پر 5 ملین ڈالر کا امریکی انعام

خلیل یوسف حرب حسن نصر اللہ کا دست راست بتایا جاتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے لبنان کی حزب اللہ ملیشیا سے وابستہ ایک لبنانی شہری سے متعلق معلومات فراہم کرنے پر پانچ ملین ڈالر کا انعام دینے کا اعلان کیا ہے۔

خلیل یوسف حرب نامی لبنانی شہری پر الزام ہے کہ انھوں نے یمن میں سرگرم حوثی ملیشیا کو غیر قانونی چینلز کے ذریعے بھاری رقوم منتقل کرنے میں اہم کردار ادا کیا۔

امریکی وزارت خارجہ کے زیر انتظام ’’انصاف کے لیے انعام‘‘ نامی پروگرام کے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر خلیل یوسف حرب کی تصویر مشتہر کرتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ ’’مطلوب شخص لبنانی حزب اللہ کے جنرل سیکرٹری حسن نصر اللہ کا دست راست ہے۔ اس نے مشرق اوسط کے کئی ملکوں میں فوجی ملیشیاؤں کے آپریشنز کی نگرانی کی ہے۔‘‘

گرفتاری سے متعلق معلومات کے لیے جاری کردہ اشتہار میں بتایا گیا ہے کہ خلیل یوسف حرب اللہ ملیشیا کی کارروائیوں میں اہم کردار ادا کرتا رہا ہے۔ نیز یہ دوسری ہم خیال دہشت گرد تنظیموں سے رابطوں کا فریضہ بھی انجام دیتا چلا آیا ہے۔

خلیل حرب دوسری دہشت گرد تنظیموں کے درمیان رابطہ کار کا کردار ادا کرتا ہے اور اس نے ’’یمن میں حزب اللہ کے حلیفوں‘‘ [یعنی حوثیوں] تک بھاری رقوم منتقل کی ہیں۔

لبنان: حزب اللہ کے جنگجو
لبنان: حزب اللہ کے جنگجو

گرفتاری میں مدد کے لیے جاری کردہ اشتہار میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ خلیل یوسف حرب سے متعلق جسے بھی کچھ معلوم ہو وہ اشہتار میں اس کی تصویر کے نیچے دیے گیے پتے پر رابطہ کر کے اطلاع دے۔

امریکی وزارت خزانہ نے روان برس جون میں ایران سے تعلق رکھنے والے ’’سمگلروں کے نیٹ ورک‘‘ کو حوثی ملیشیا تک رقوم منتقلی کی پاداش میں سزائیں سنائی تھیں۔ امریکا کے بقول اس امداد کو استعمال کر کے حوثی یمن اور سعودی عرب کے مفادات پر حملے کرتے ہیں۔

یمن: حوثی جنگجو
یمن: حوثی جنگجو