.
کرونا وائرس

غزہ :حماس نے کووِڈ-19ویکسین لگوانے کی حوصلہ افزائی کے لیے لاٹری متعارف کرادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

غزہ کی پٹی میں حکمران فلسطینی جماعت حماس نے کووِڈ-19کی ویکسین لگوانے کی حوصلہ افزائی کے لیے سوموار کے روز ایک لاٹری متعارف کرائی ہے۔ اس کے ذریعے ویکسین لگوانے والے افراد3000 ڈالر تک بیش قیمت انعامات کے حق دار ہوسکتے ہیں۔

غزہ کی پٹی کی آبادی قریباً 20 لاکھ نفوس پر مشتمل ہے۔اسرائیل کے محاصرہ زدہ اس علاقے میں حالیہ دنوں میں کووڈ-19 کی زیادہ متعدی شکل ڈیلٹا کے یومیہ کیسوں میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔

غزہ کے مکینوں میں سے اب تک قریباً ایک لاکھ 35 ہزارافراد نے کووِڈ-19 ویکسین کی دونوں خوراکیں لگوائی ہیں۔غزہ کوویکسین کی قریباً 336,000 خوراکیں وصول ہوئی ہیں لیکن بہت سے لوگ ویکسین لگوانے سے گریزاں ہیں۔

اسی وجہ سے حماس کے تحت وزارت صحت نے لوگوں کو ویکسین لگوانے کی ترغیب دینے کی غرض سے ایک لاٹری متعارف کرائی ہے اور بدھ سے اس کی قرعہ اندازی میں شامل ہونے والے 55 سال یا اس سے زیادہ عمر کے افراد کے پاس 10,000 شیکل (3,000 ڈالر سے زیادہ) کے جیتنے کا امکان ہوگا۔

روزانہ قرعہ اندازی میں ویکسین لگوانے والے نئے افراد میں سے 10 کے نام نکالے جائیں گے اور وہ 200 ڈالرکے مساوی انعامات جیت سکیں گے۔واضح رہے کہ غزہ میں غُربت کی شرح 50 فی صد سے تجاوز کرگئی ہے۔

وزارت صحت کے ترجمان اشرف القدرہ نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ قرعہ اندازی میں دس ہزار شیکل جیتنے والے تین خوش قسمت افراد کے ناموں کا اعلان ایک ماہ میں کردیا جائے گا۔انھوں نے کہا کہ اس اقدام کا مقصد غزہ کے مکینوں کی ویکسین لگوانے کی حوصلہ افزائی کرنا ہے تاکہ وہ کرونا وائرس سے محفوظ رہیں اور اپنی جانیں بچائیں۔

حماس حکام نے تمام سرکاری ملازمین پر بھی یہ پابندی عاید کی ہے کہ وہ لازمی طورپرکرونا وائرس کی ویکسین لگوائیں۔واضح رہے کہ غزہ میں اب تک کووِڈ-19 کے 122,520 سے زیادہ کیسوں کی تشخیص ہوئی ہے۔ان میں 1125مریض وفات پاچکے ہیں۔

ادھر فلسطینی اتھارٹی کے زیرانتظام اور اسرائیل کے مقبوضہ دریائے اردن کے مغربی کنارے کے علاقے میں کروناوائرس کے سرکاری طورپر204,700 سے زیادہ کیس ریکارڈ کیے گئے ہیں۔ان میں سےقریباً 2500 مریض جان کی بازی ہارچکے ہیں۔غرب اردن میں 28 لاکھ فلسطینی رہتے ہیں۔فلسطینی اتھارٹی نے بھی اپنے سرکاری ملازمین پر لازمی ویکسین لگوانے کی پابندی عاید کی ہے۔