.
ایران جوہری معاہدہ

جوہری پروگرام کو ’دھمکانے‘ پر ایران کی سلامتی کونسل میں اسرائیل کے خلاف شکایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ میں ایرانی سفارتی مشن نے جمعہ کے روز اعلان کیا کہ اس نے سلامتی کونسل کے صدر کو ایک خط بھیجا ہے جس میں انہیں ایرانی جوہری پروگرام کے خلاف اسرائیلی دھمکیوں پر تل ابیب کے خلاف شکایت کی گئی ہے۔

اپنے مکتوب میں ایرانی مندوب نے کہا کہ "تہران کے خلاف اسرائیلی دھمکیاں بین الاقوامی قوانین کی سنگین خلاف ورزیوں کا ثبوت ہیں۔"

مکتوب میں کہا گیا ہے کہ اسرائیل نے ایرانی سائنسدانوں، جوہری مراکز کے خلاف، علاقے میں تجارتی جہازوں پر حملوں کے علاوہ ایران کےخلاف "ان گنت" کھلے اور خفیہ اقدامات کیے ہیں۔

ایران کے ساتھ جوہری معاہدے کے لئے مذاکرات کا ایک منظر۔
ایران کے ساتھ جوہری معاہدے کے لئے مذاکرات کا ایک منظر۔

مشن نے اسرائیل کی کسی بھی "ممکنہ مہم جوئی" کے خلاف خبردار کرتے ہوئے کہا کہ تہران اسرائیل کی طرف سے کسی بھی خطرے کا جواب دینے کا "فطری حق" رکھتا ہے۔ ایران اپنے شہریوں، مفادات، تنصیبات کے تحفظ کے لیے تمام ضروری اقدامات کرنے، دہشت گردانہ اور تخریبی سرگرمیوں کا مقابلہ کرنے کا حق رکھتا ہے۔

یہ شکایت ایران کی ایٹمی تنصیبات میں تواتر کے ساتھ رونما ہونے والے ساتھ حادثات کے بعد سامنے آئی ہے۔ تہران اسرائیل پر الزام عائد کرتا ہے کہ وہ ان میں سے کچھ واقعات کا ذمہ دار ہے جبکہ اسرائیلی حکام نے بارہا اعلان کیا ہے کہ وہ ایران کے جوہری پروگرام کی ترقی کو روکنے کے لیے ہر ممکن کوشش کرے گا۔