.

حوثی ملیشیا کا یمنی فوجی اڈے پرحملہ فوجیوں سمیت درجنوں افراد جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کی وفادار فوج کے ایک اڈے پر ایرانی حمایت یافتہ باغی ملیشیا نے بیلسٹک میزائلوں اور بمبار ڈرون طیاروں سے حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں کم سے کم 30 یمنی فوجیوں سمیت درجنوں افراد جاں بحق اور کئی زخمی ہوگئے۔

یمن کے مقامی ذرائع کے مطابق حوثی ملیشیا نے شمالی عدن سے 60 کلو میٹر دور الحج گورنری میں واقع العند فوجی اڈے پر اتوار کے روز حملہ کیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ حوثی ملیشیا نے فوجی اڈے پرجاری تربیتی مشقوں کے دوران فوجیوں کو نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں غیرمعمولی جانی نقصان ہوا ہے۔

یمن کے ایک مقامی عہدیدار نے ’اے ایف پی‘ کو بتایا کہ حوثی ملیشیا نے بیلسٹک میزائلوں اور بمبار ڈرون طیاروں سے حملہ کیا۔

دوسری جانب لحج گورنری میں موجود ابن خلدون اسپتال کے ایک ذرائع نے بتایا ہے کہ اسپتال میں 7 افراد کی لاشیں اور 50 زخمیوں کولایا گیا ہے۔

یمنی فوج کے ایک ذریعے کا کہنا ہے کہ العند فوجی اڈے پرحملے میں 12 افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔ یہ حملہ فوجی اڈے پرصبح کے وقت فوجی پریڈ پر کیا گیا۔

خیال رہے کہ العند فوجی اڈہ سنہ 2019ء کے بعد سے حوثی ملیشیا کی کارروائیوں اور حملوں کے نشانے پر ہے۔ حوثی ملیشیا حملوں کے لیے ایرانی ساختہ بمبار ڈرون اور دیگر ہتھیار استعمال کررہے ہیں۔